Tuesday , October 24 2017
Home / سیاسیات / ڈیجیٹل دنیا میں ہندی بلند ترین مقام پر ہوگی ‘ بین الاقوامی ہندی کانفرنس سے خطاب

ڈیجیٹل دنیا میں ہندی بلند ترین مقام پر ہوگی ‘ بین الاقوامی ہندی کانفرنس سے خطاب

BHOPAL, SEP 10 (UNI):- Prime Minister Narendra Modi being welcomed by External Affairs Minister Sushma Swaraj at the 10th World Hindi Conference in Bhopal on Thursday. UNI PHOTO-49U

یو پی کے تاجروں کو چائے بیچنے کے دوران ہندی سیکھنے کی یاد ‘ مدھیہ پردیش میں وزیراعظم نریندر مودی کی تقریر

بھوپال۔10ستمبر ( سیاست ڈاٹ کام )  یہ کہتے ہوئے کہ  انگریزی ‘ چینی اور ہندی آئندہ دنوں میں ڈیجیٹل دنیا پر حکومت کریں گے ۔ وزیراعظم نریندر مودی نے آج نوٹ کیا کہ لسانی بازار زبردست تھا اور کمپنیاں اس سے نفع حاصل کیا کرتے تھی‘ اب کمپنیاں ایسے آلات تیار کرسکتی ہیں جو تیز رفتار ہوں اور نفع حاصل کرسکتی ہیں ۔ وہ وشوا ہندو سمیلن ( عالمی ہندی کانفرنس ) سے لال پریڈ گراؤنڈ پر خطاب کررہے تھے ۔مودی نے خطرے سے دوچار زبانوں کے تحفظ کیلئے اقدامات کی بھی اپیل کی اور نشاندہی کی کہ دنیا بھر میں خطرے سے دوچار زبانوں کے بارے میں تشویش پائی جاتی ہے جو ماضی کی باقیات بننے جارہی ہیں ۔ انہوں نے کہا کہ آئندہ دنوں میں تین زبانیں انگریزی ‘ چینی اور ہندی ڈیجیٹل دنیا میں بااثر برقرار رہیں گی ۔ انہوں نے کہا کہ زبانوں کا بازار زبردست ہے اور کمپنیاں آلات کرتے ہوئے اس سے فائدہ حاصل کرسکتی ہیں ۔ انہوں نے ہندی کی اہمیت اُجاگر کی اور کہا کہ اسے مالا مال کرنے کی ضرورت ہے ۔ مودی نے کہا کہ اگر ہم ہندی بھول جائیں تو یہ ایک قومی نقصان ہوگا ۔ انہوں نے کہا کہ حالانکہ میری مادری زبان گجراتی ہے ۔ بعض اوقات میں سوچتا ہوں کہ اگر میں ہندی نہ جانتا تو میرا کیا حشر ہوتا ۔

انہوں نے کہا کہ کسی بھی زبان کو اچھی طرح جاننا طاقتور بناتا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ ساتھ ہی ساتھ نہ صرف ہندی بلکہ خطرے سے دوچار دیگر زبانوں کو بھی فروغ دینا چاہیئے ۔ انہوں نے کہا کہ اگر ہم زبانوں کے لسانی عالموں کے انتباہ کا اثر نہ لیں تو یہ زبانیں تاریخ کا حصہ بن جائیں گی ۔ زبان نہیں ہوگی تو ادب کیسے باقی رہے گا ۔ انہوں نے کہا کہ اگر آپ زبانوں کا تحفظ اور حفاظت نہ کریں گے تو وہ مرجائیں گی ‘ معدوم ہوجائیں گی اور ایسی صورتحال پیدا ہوگی جیسے کہ ہم فلم دیکھیں گے لیکن یہ نہیں جانیں گے کہ ڈینوسارس کیسے نظر آتے تھے ۔ وزیراعظم پُرزور انداز میں کہا کہ زبان سب کو ساتھ لیکر چلنے والی ہونی چاہیئے ‘ دور کرنے والی نہیں ۔ انہوں نے کہا کہ اگر مختلف علاقائی زبانوں کے ورکشاپ منعقد کئے جائیں تو ملک بھر میں بولی جاتی ہیں تو ان زبانوں کے اچھے الفاظ ہندی میں شامل ہوسکیں گے ۔ انہوں نے کہا کہ ہر نسل کا فرض ہے کہ ممکن ہوسکے تو زبانوں کی حفاظت کرے ‘ تہذیبی ورثے کی حفاظت کرے اور اسے آئندہ نسلوں تک پہنچائیں جب کوئی چیز تحریر یا کندہ کی جاتی ہے تو یہ پتھر پر پائی جاتی ہے ۔ محکمہ آثار قدیمہ برسوں تک تحقیق کرتا ہے کہ یہ زبان کونسی ہے ۔ مودی نے یاد دہانی کی کہ وہ گجرات میں چائے بیچا کرتے تھے ۔ انہوں نے ہندی سیکھی جب کہ وہ یو پی کے تاجروں کو چائے بیچتے تھے جو بھینسیں خریدنے کیلئے گجرات کا سفر کرتے تھے ۔ انہوں نے کہا کہ ہمیں مسلسل جدوجہد کرنی چاہیئے تاکہ ہماری زبان خوشحال ہوسکے ۔ وزیراعظم نے کہاکہ وہ عوامی زندگی سے وابستہ ہیں ‘ اگر وہ کبھی ٹاملناڈو جائیں اور کہیں ’’ ونکم‘‘ تو انہیں برقی رو دوڑنے جیسا پوری ریاست میں اثر محسوس ہوگا ۔ مودی نے کہا کہ وہ چاہتے ہیں کہ مختلف زبانیں جاننے کی اہمیت کو اُجاگر کریں ۔ انہوں نے کہا کہ ہندی کی دیگر ممالک جیسے ماریشیس ‘ منگولیا ‘ چین اور روس میں مقبولیت بڑھتی جارہی ہے ۔ ہندی فلمیں بیرونی ممالک میں اس زبان کو فروغ دے رہی ہے ۔

TOPPOPULARRECENT