Friday , April 28 2017
Home / Top Stories / کابل کے مضافات میں بس بم دھماکہ

کابل کے مضافات میں بس بم دھماکہ

طالبان کے قید خانہ پر سرکاری فوج کا حملہ ، 32 قیدی رہا
کابل ۔13 مارچ ۔ ( سیاست ڈاٹ کام )کابل کے مضافات میں مصروف اوقات کے دوران ایک طاقتور بم دھماکہ ایک بس میں ہوا ۔ سرکاری عہدیداروں کے بموجب آسمان میں کثیف دھوئیں کابادل اُٹھتا ہوا دیکھا گیا ۔ کسی بھی گروپ نے تاحال اس بم دھماکہ کی ذمہ داری قبول نہیں کی ہے ، لیکن سالانہ موسم بہار کی جارحیت کے آغاز سے قبل ہی طالبان نے اپنے حملوں میں شدت پیدا کردی ہے ۔ آج کے بس بم دھماکے میں کم از کم ایک خاتون ہلاک اور دیگر 8 افراد زخمی ہوگئے ۔ وزارت داخلہ کے بیان کے بموجب ابتدائی اطلاعات سے معلوم ہوتا ہے کہ کابل کے مضافات میں ایک منی بس میں طاقتور بم دھماکہ ہوا ۔ کابل پولیس کے ترجمان بصیر مجاہد نے کہا کہ مزید ہلاکتوں کا اندیشہ ہے ۔ پولیس دھماکہ کی نوعیت کی تحقیقات میں مصروف ہے۔ بندوق بردار ڈاکٹروں کے بھیس میں زبردستی گزشتہ چہارشنبہ کو فوجی اسپتال میں گھس گئے تھے اور وہاں چھ گھنٹہ طویل حملے کے دوران 100 سے زیادہ افراد کو ہلاک کردیا تھا ۔ زندہ بچ جانے والے طبی عملے اور فوج کے ذرائع نے اطلاع دی کہ دو زیرتربیت افراد حملہ آوروں میں شامل تھے ۔ زبردست حفاظتی انتظامات کے تحت واقع اسپتال میں حملے سے پتہ چلتا ہے کہ محکمہ سراغ رسانی اطلاعات کی فراہمی میں ناکام ہے ۔ اس سے یہ بھی ظاہر ہوتا ہے کہ شورش پسند اعلیٰ سطحی سرکاری ، فوجی طبی اداروں میں زبردستی داخل ہونے میں کامیاب ہیں۔ فریش مریضوں کو حملہ آوروں نے بے رحمی کے ساتھ چاقو زنی کا نشانہ بنایا ۔ دستی بم پرہجوم وارڈس میں پھینکے اور انتہائی قریب سے لوگوں پر گولی چلادی ۔ دولت اسلامیہ نے اس حملے کی ذمہ داری قبول کرلی تھی ۔ دریں اثناء آج افغانستان کی سرکاری فوج طالبان کے زیرانتظام قید خانہ میں جو صوبہ جنوبی ہلمند میں واقع تھا ، زبردستی داخل ہوگئی اور 32 افغان شہریوں کو جو اس قید خانہ میں تھے رہا کروالیا۔ فوج کے ترجمان محمد رسول کے بموجب چار افغان فوجی رہا شدہ قیدیوں میں شامل ہیں۔ طالبان کے ترجمان قاری یوسف احمدی کے بموجب تمام 32 قیدی منشیات کے عادی تھے ۔ طالبان نے جنوبی صوبہ ہلمند میں اپنی جڑیں مضبوط کرلی ہیں۔

Leave a Reply

TOPPOPULARRECENT