Saturday , September 23 2017
Home / Top Stories / کابینہ کی تشکیل پر شاہد عباسی کی نواز شریف سے بات چیت

کابینہ کی تشکیل پر شاہد عباسی کی نواز شریف سے بات چیت

 

اسلام آباد ۔ 2 اگست (سیاست ڈاٹ کام)وزیرِاعظم شاہد خاقان عباسی نے کابینہ کی تشکیل سے قبل آج اپنی جماعت کے قائد اور سابق وزیراعظم نواز شریف سے مری میں ملاقات کی ہے۔ملاقات میں وزیراعلیٰ پنجاب شہباز شریف بھی شریک تھے۔طویل مشاورتی کے بعد شاہد خاقان عباسی نے کہا کہ کابینہ سے متعلق مشاورت ہوئی ہے اور اْن کے مطابق یہ مرحلہ آئندہ ایک دو روز میں مکمل ہو جائے گا۔مسلم لیگ (ن) حلقہ این اے 120 کے انتخابات میں بھی اور دیگر سیاسی مراحل میں پہلے سے زیادہ کامیابی حاصل کرے گی۔‘‘شاہد خاقان عباسی نے کہا کہ نواز شریف نے ہدایت کی ہے کہ حکومت جاری پالیسیوں کو برقرار رکھا جائے۔’’تاکہ ہم دنیا کو یہ دکھا سکیں کہ ملک میں وزیراعظم تو بدل سکتا ہے لیکن پالیسی برقرار رہتی ہے۔‘‘شاہد خاقان عباسی منگل کو قومی اسمبلی کے 342 اراکین کے ایوان سے 221 ووٹ لے کر وزیرِاعظم منتخب ہوئے تھے اور اپنی پہلی تقریر میں بھی اْنھوں نے اپنی جماعت کے قائد نواز شریف کو ’’عوام کا وزیرِاعظم‘‘ قرار دیتے ہوئے اْن کا بھرپور دفاع کیا تھا۔

شریف خاندان کیخلاف مقدمہ ،نگران جج کا تقرر
اسلام آباد ۔ 2 اگست (سیاست ڈاٹ کام)عدالت عظمیٰ کے چیف جسٹس ثاقب نثار نے پاناما پیپر معاملے کے عدالتی فیصلے کی روشنی میں شریف خاندان کے احتساب بیورو کو دیے گئے حکم پر عملدرآمد کی نگرانی کے لیے جسٹس اعجاز الاحسن کو مقرر کیا ہے۔سپریم کورٹ سے جاری ایک بیان میں کہا گیا کہ چونکہ جسٹس اعجاز الاحسن فی الوقت بیرون ملک ہیں لہذا ان کی جگہ جسٹس اعجاز افضل خان اس معاملے کو دیکھیں گے۔ یہ دونوں جج صاحبان پاناما پیپرز معاملے کا گزشتہ ہفتے فیصلہ سنانے والے پانچ رکنی بینچ میں بھی شامل تھے۔بینچ نے اپنے فیصلے میں نواز شریف کو وزارت عظمیٰ کے منصب کے لیے نااہل قرار دینے کے علاوہ قومی احتساب بیورو کو شریف خاندان اور سابق وزیرخزانہ اسحٰق ڈار کے خلاف چھ ہفتوں میں ریفرنسز دائر کرنے کا حکم دیا تھا۔ مزید برآں ان ریفرنسز پر چھ ماہ میں کارروائی مکمل کرنے کی ہدایت کرتے ہوئے اس عمل کی نگرانی کے لیے سپریم کورٹ کا ایک جج مقرر کرنے کا بھی کہا گیا تھا۔رواں ہفتے ہی احتساب بیورو نے کہا کہ عدالتی فیصلے کی روشنی میں راولپنڈی؍ اسلام آباد کی احتساب عدالتوں میں چار ریفرنسز دائر کیے جائیں گے۔ادارے کے اعلامیہ کے مطابق ان میں شریف خاندان کے لندن میں واقع فلیٹس اور سعودی عرب میں ان کی دو اسٹیل ملز کے ریفرنسز کے علاوہ اسحٰق ڈار کے خلاف ان کی آمدن سے زیادہ اثاثے رکھنے کی تحقیقات کی جائیں گی۔یہ ریفرنسز سابق وزیراعظم نواز شریف ان کے بیٹوں حسن اور حسین نواز، بیٹی مریم نواز اور داماد محمد صفدر کے خلاف دائر کیے جائیں گے۔

 

TOPPOPULARRECENT