Tuesday , August 22 2017
Home / شہر کی خبریں / کارپوریٹ ہاسپٹلس، ہیلت کارڈ پر علاج کرنے تیار نہیں

کارپوریٹ ہاسپٹلس، ہیلت کارڈ پر علاج کرنے تیار نہیں

سرکاری ملازمین اور آروگیہ سری ہیلت کارڈ رکھنے والے بے شمار افراد پریشان
حیدرآباد 12 جون (سیاست نیوز) کارپوریٹ دواخانوں میں سرکاری اسٹاف اور آروگیہ سری ہیلت کارڈ رکھنے والے بے شمار افراد اخراجات کی ادائیگی کے مسئلہ پر حکومت اور کارپوریٹ ہاسپٹلس کے منیجمنٹس کے مابین بات چیت میں تعطل کی وجہ سے مفت علاج کی سہولت سے محروم ہیں۔ تقریباً 6 لاکھ سرکاری ملازمین، پنشنرس اور بے شمار ہیلت کارڈ استفادہ کنندے گزشتہ چند سال سے کارپوریٹ دواخانوں میں علاج کرانے سے محروم ہیں کیوں کہ بڑے دواخانے آروگیہ سری کے تحت علاج کرنے سے انکار کررہے ہیں جبکہ ریاست میں 12 کارپوریٹ دواخانے حکومت سے علاج معالجہ کے اخراجات میں اضافہ کا مطالبہ کررہے ہیں اور حکومت اس مطالبہ کو قبول کرنے سے انکار کررہی ہے۔ کارپوریٹ دواخانوں اور حکومت کے مابین بات چیت تعطل سے دوچار ہے کیوں کہ دونوں فریق اپنے اپنے موقف پر اٹل ہیں۔ تلنگانہ نان گزیٹیڈ آفیسرس اسوسی ایشن کے صدر کے رویندر ریڈی نے کہاکہ ان دواخانوں میں بھی جہاں ہیلت کارڈ قبول کئے جارہے ہیں، تمام بیماریوں کا علاج نہیں کیا جارہا ہے اور استفادہ کنندوں کے لئے مسائل کھڑے کئے جارہے ہیں۔ ہیلت کارڈس کے تحت استفادہ کنندوں کو سہولت دی گئی ہے کہ وہ کسی ادائیگی کے بغیر کسی بھی دواخانے میں تمام بیماریوں اور حادثات کا علاج کرائیں۔ لیکن کارپوریٹ دواخانے ہیلت کارڈ قبول کرنے سے انکار کررہے ہیں کیوں کہ ادائیگی کے مسئلہ پر ان کا حکومت سے اختلاف ہے۔ ہاسپٹلس کا کہنا ہے کہ حکومت کی مقررہ شرحیں ناکافی ہیں۔ اس میں اضافہ ہونا چاہئے۔ حکومت اور کارپوریٹ دواخانوں کے انتظامیہ کے مابین اب تک ہوئی بات چیت ناکام رہی ہے۔

TOPPOPULARRECENT