Monday , September 25 2017
Home / Top Stories / کاسٹروکے انتقال سے کیوبا میں تبدیلی کا امکان

کاسٹروکے انتقال سے کیوبا میں تبدیلی کا امکان

CARACAS, NOV 27:- Rogelio Polanco (L), Cuba's Ambassador to Venezuela and Venezuela's President Nicolas Maduro (C) attend a homage ceremony of late former Cuban leader Fidel Castro at the 4F military fort in Caracas, Venezuela November 26, 2016. REUTERS-2R

ہوانا، 27 نومبر (سیاست ڈاٹ کام) کیوبا کے انقلابی رہنما اور سابق صدر فیدل کاسترو کے انتقال کے بعد اب ان کے چھوٹے بھائی اور ملک کے موجودہ صدر راؤل کاسترو کے پاس اقتصادی اصلاحات کی سمت میں کھل کر کام کرنے کا موقع ملے گا لیکن یہ اس پر بھی انحصار کرے گا کہ امریکہ کے نو منتخب صدر ڈونالڈ ٹرمپ کمیونسٹ حکومت کے ساتھ مل کر کام کریں گے یا اسے چیلنج پیش کریں گے ۔صدر بننے کے بعد راؤل کاسترو نے حالیہ برسوں میں بازار پر مبنی اصلاحات کی شروعات کی ہے ، لیکن اصلاحات کی رفتار بہت سست ہے ۔کیوبا کے لوگوں کا خیال ہے کہ فیدل کے اثرات کی وجہ سے راؤل کھل کر کام کرنے کے قابل نہیں تھے اس لئے اقتصادی اصلاحات کی سمت میں آگے بڑھنے کے علاوہ امریکہ سے تعلقات بہتر بنانے کے معاملے میں بھی وہ کافی سست رفتاری سے آگے بڑھ رہے تھے ۔اقتصادی تنگی کا شکار رہے اس کیریبین ملک کے تعلقات امریکہ سے بہتر بنانے کی سمت میں مسٹر راؤل مزید عملی اقدامات کرتے ہوئے وہاں سے تجارتی پروازوں، ڈالر کے تبادلہ اور امریکی سیاحوں کے لیے ملک میں آنے کا راستہ کھول دیا تھا۔تاہم دونوں ممالک کے تعلقات اب امریکہ کے نو منتخب صدر ڈونالڈ ٹرمپ کے موقف پر بھی طے کرے گا۔مسٹر ٹرمپ نے کیوبا کو لے کر اگر سخت موقف اپنایا تو گزشتہ دو سالوں میں مسٹر راؤل طرف سے اٹھائے گئے اقدامات کا کوئی خاص فائدہ نہیں ہو گا۔اپنے انتخابی مہم کے آخری دنوں میں مسٹر ٹرمپ نے کیوبا میں کھلے امریکی سفارت خانے کو بند کرنے کی بات کہی تھی۔تقریباً پانچ دہائی بعد ڈیڑھ سال پہلے کیوبا میں امریکہ کا سفارتخانہ دوبارہ کھلا تھا۔ لیکن کاسترو کا انتقال مسٹر ٹرمپ کیلئے کیوبا سے تعلقات بہتر بنانے کا ایک موقع بھی ہوگا۔امریکی ووٹروں اور کاروباری لوگوں کے درمیان کیوبا کافی مقبول ہے اور وہ وہاں نئے امکانات تلاش کررہے ہیں۔85 سالہ راؤل کاسترو نے بھی وعدہ کیا ہے کہ 2018 میں وہ کیوبا کی سیاست سے ریٹائرمنٹ لے لیں گے جس کے بعد امریکہ کے لیے کیوبا سے تعلقات بہتر بنانا علامتی سطح پر آسان ہو سکتا ہے ۔

TOPPOPULARRECENT