Friday , August 18 2017
Home / ہندوستان / کالا دھن کا تخمینہ لگانا مشکل تحقیقات کے بعد ہی آگے کی کارروائی۔ حکومت کی وضاحت

کالا دھن کا تخمینہ لگانا مشکل تحقیقات کے بعد ہی آگے کی کارروائی۔ حکومت کی وضاحت

نئی دہلی۔/3مئی، ( سیاست ڈاٹ کام ) حکومت نے آج کہا ہے کہ ہندوستانیوں کی جانب سے بیرونی ممالک کو روانہ کالا دھن ( بلیک منی ) کی رقم کا سرکاری تخمینہ نہیں لگایا گیا ہے۔ ہندوستانی شہریوں کی جانب سے بیرونی ممالک کو روانہ کالا دھن کا پتہ چلانے کیلئے قانون نافذ کرنے والے اداروں بشمول انکم ٹیکس ڈپارٹمنٹ، انفورسمنٹ ڈائرکٹوریٹ ، سی بی آئی کی تحقیقات جاری ہے جس کے بعد آگے کی کارروائی کی جائے گی۔ مملکتی وزیر فینانس جینت سنہا نے آج راجیہ سبھا میں ایک تحریری جواب میں بتایا کہ بیرونی ممالک میں پوشیدہ دولت کا حسب کتاب حکومت کے پاس نہیں ہے۔ یہ دریافت کئے جانے پر کہ آیا عالمگیر سطح پر ٹیکس سے مستثنیٰ ممالک میں ہندوستانیوں کا کالا دھن جملہ 152-181 بلین ڈالر ہے جیسا کہ بینک آف اٹلی کے ماہرین معاشیات نے تخمینہ پیش کیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ ایسا کوئی ٹھوس ثبوت دستیاب نہیں ہوا ہے جس کی بنیاد پر مذکورہ رقم کی توثیق کی جاسکے۔ مرکزی وزیر نے یہ نشاندہی کی کہ دیگر ماہرین معاشیات نے ہندوستانیوں کی بلیک منی کا تخمینہ 4.5 بلین ڈالر لگایا ہے جس کے باعث متضاد رپورٹس قابل اعتبار نہیں ہوسکتی۔

TOPPOPULARRECENT