Thursday , August 17 2017
Home / ہندوستان / کالج اسٹاف پر حملہ۔ سماجوادی پارٹی لیڈر کے خلاف کیس

کالج اسٹاف پر حملہ۔ سماجوادی پارٹی لیڈر کے خلاف کیس

الہ آباد۔/15 ڈسمبر، ( سیاست ڈاٹ کام ) مجرمانہ پس منظر کے حامل سیاستداں اور مجوزہ اتر پردیش اسمبلی انتخابات کیلئے سماج وادی پارٹی امیدوار عتیق احمد کے خلاف شہر کے مضافات میں واقع ایک خانگی تعلیمی ادارہ کے اسٹاف پر حملہ کے الزام میں کیس درج کرلیا گیا ہے ۔ پولیس نے آج یہ اطلاع دی ہے اور بتایا کہ شکایت کے مطابق عتیق احمد نے اپنے حامیوں کے ساتھ سام ہیگن باغ انسٹی ٹیوٹ آف اگریکلچر ، ٹکنالوجی اینڈ سائنس میں کل زبردستی داخل ہوکر اسٹاف ارکان پر حملہ کردیا جو کہ غیر قانونی داخلے پر مخالفت کررہے تھے۔ انسٹی ٹیوٹ کے عہدیدار تعلقات عامہ کی شکایت نائینی پولیس اسٹیشن میں عتیق احمد اور ان کے 4 حامیوں کے خلاف مختلف دفعات کے تحت کیس درج کرلیا گیا۔ سینئر پولیس سپرنٹنڈنٹ الہ آباد مسٹر شیلاب ماتھر نے بتایا کہ ایف آئی آر میں دیگر 50 نامعلوم افراد کا نام بھی درج کیا گیا۔ پی آر او ررما کانت راجے نے بتایا کہ عتیق اور ان کے حامیوں نے انسٹی ٹیوٹ میں اچانک داخل ہوکر وائس چانسلر سے ملاقات کی خواہش ظاہر کی جس پر سیکوریٹی حکام نے انہیں اطلاع دی کہ وائس چانسلر فی الحال موجود نہیں ہیں اورملاقات کیلئے دوبارہ آئیں ۔ برہمی کی حالت میں عتیق احمد اور ان کے حامیوں نے سیکوریٹی حکام کی پٹائی شروع کردی اور مداخلت کرنے پر ایک اسٹاف رکن کو ڈھکیل دیا تاہم عتیق احمد جو کہ کانپور کنٹونمنٹ حلقہ سے حکمران سماجوادی پارٹی کے امیدوار نامزد کئے گئے ہیں ان الزامات کی تردید کی ہے اور بتایا کہ وہ انسٹی ٹیوٹ سے 2 طلباء محمد سیف اور ثاقب کے اخراج کے فیصلہ پر نظر ثانی کیلئے وائس چانسلر سے نمائندگی کرنے وہاں گئے تھے۔

TOPPOPULARRECENT