Wednesday , October 18 2017
Home / شہر کی خبریں / کالیشورم پراجکٹ پر نیشنل گرین ٹریبونل کے حکم التواء کو چیالنج

کالیشورم پراجکٹ پر نیشنل گرین ٹریبونل کے حکم التواء کو چیالنج

کانگریس کی خوشی قابل مذمت ، ٹی ہریش راؤ کا بیان
حیدرآباد ۔ 6۔ اکتوبر (سیاست نیوز) وزیر آبپاشی ہریش راؤ نے کہا کہ کالیشورم پراجکٹ پر نیشنل گرین ٹریبونل کے حکم التواء کو سپریم کورٹ میں چیالنج کیا جائے گا تاکہ پراجکٹ کی تعمیر میں رکاوٹ پیدا نہ ہو۔ ہریش راؤ نے کہا کہ ٹریبونل نے جو حکم التواء جاری کیا ہے ، اس پر کانگریس پارٹی کے قائدین خوشی منارہے ہیں جو قابل مذمت ہے۔ کانگریس کا رویہ ریاست کی ترقی میں رکاوٹ کے مترادف ہے۔ انہوں نے کہا کہ سپریم کورٹ سے رجوع ہوکر کالیشورم پراجکٹ کے سلسلہ میں انصاف حاصل کیا جائے گا ۔ میڈیا کے نمائندوں سے بات چیت کرتے ہوئے ہریش راؤ نے کہا کہ پراناہیتا چیوڑلہ پراجکٹ کی تعمیر کو جاری رکھتے ہوئے حکومت نے کالیشورم پراجکٹ کی تعمیر کا فیصلہ کیا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ سابق میں ٹی آر ایس نے کبھی بھی پراجکٹس کی راہ میں رکاوٹ پیدا نہیں کی اور کسی بھی پراجکٹس کے سلسلہ میں عدالت کا دروازہ نہیں کھٹکھٹایا ۔ انہوں نے الزام عائد کیا کہ کانگریس پارٹی کو عوام کے مفادات سے زیادہ سیاسی مفادات عزیز ہیں۔ انہوں نے کہا کہ کانگریس کے اس رویہ کو تلنگانہ کے عوام کبھی معاف نہیں کریں گے۔ انہوں نے کہا کہ گھر گھر صاف پینے کا پانی سربراہ کرنے کیلئے حکومت نے مشن بھگیرتا اسکیم کا آغاز کیا ہے۔ اس مشن کی تکمیل میں کالیشورم پراجکٹ کا اہم رول ہوگا ۔ انہوں نے کہا کہ نیشنل گرین ٹریبونل کی جانب سے اس پراجکٹ پر حکم التواء عارضی رکاوٹ ہے۔ سپریم کورٹ سے رجوع ہوکر پراجکٹ کی تیزی سے تکمیل کی جائے گی۔ ہریش راؤ نے الزام عائد کیا کہ کانگریس کے 10 سالہ دور حکومت میں پراناہیتا پراجکٹ کی اجازت حاصل کرنے میں کامیابی حاصل نہیں ہوئی جبکہ ٹی آر ایس حکومت نے مہاراشٹرا سے معاہدہ کرتے ہوئے پراجکٹ کی تعمیر کا آغاز کیا لیکن مخالف طاقتیں عدالت سے رجوع ہوکر رکاوٹ پیدا کر رہی ہے ۔ انہوں نے کہا کہ پراجکٹ کی راہ میں رکاوٹ دراصل تلنگانہ سے ناانصافی کے مترادف ہے۔ انہوں نے کہا کہ گزشتہ تین برسوں میں حکومت نے ریاست کی ترقی اور عوامی بھلائی پر خصوصی توجہ دی۔ کئی نئے پراجکٹس کا آغاز کیا گیا اور ہر پراجکٹ کو روکنے کیلئے اپوزیشن نے طرح طرح کے حربے استعمال کئے ۔ انہوں نے کہا کہ اگر اپوزیشن جماعتیں اپنے رویہ میں تبدیلی نہیں لائیں گے تو آئندہ انتخابات میں عوام انہیں سبق سکھائیں گے۔

TOPPOPULARRECENT