Thursday , August 17 2017
Home / ہندوستان / کالے دھن کا اعلان کرنے کی مہلت ختم ‘ صرف 3770 کروڑ روپئے کا افشا

کالے دھن کا اعلان کرنے کی مہلت ختم ‘ صرف 3770 کروڑ روپئے کا افشا

انکشاف نہ کرنے والوں کے خلاف کارروائی کی جائیگی : حکومت ‘ کالے دھن پر مودی کے دعوے کھوکھلے ثابت ہوئے : کانگریس

نئی دہلی ۔ یکم اکٹوبر ( سیاست ڈاٹ کام ) کالے دھن کا افشا کردینے حکومت کی جانب سے معلنہ معافی کی مہلت کے اختتام تک جملہ 3770 کروڑ روپئے کی غیر محسوب رقومات کا اعلان کیا گیا ہے ۔ جملہ 638 افراد نے اپنے کالے دھن کا اعلان کیا ہے ۔ حکومت کے اس اقدام پر سیاسی گوشوں کی جانب سے تنقیدیں کی گئی ھیں۔ وزارت فینانس نے ایک بیان میں کہا گیا ہے کہ جملہ 638 اعلانات کئے گئے ہیں تاکہ حکومت کی جانب سے معلنہ ایک مرتبہ کی معافی کی سہولت سے استفادہ کیا جاسکے ۔ ان اعلانات میں جملہ 3770 کروڑ روپیوں کا اعلان ہوا ہے ۔ وزارت فینانس نے کہا کہ ان اعداد و شمار کا قطعیت کے ساتھ جائزہ لیا جانا ہے ۔ وزارت فینانس نے کہا کہ اس غیر محسوب دولت پر جملہ 30 فیصد ٹیکس اور پھر مزید 30 فیصد جرمانہ عائد کیا جائیگا ۔ یہ جرمانہ اور ٹیکس 31 ڈسمبر 2015 تک ادا کیا جانا ہے ۔

غیرمحسوب اور کالے دھن کے اعلان کی مہلت کے خاتمہ کے فوری بعد حکومت نے اعلان کیا ہے کہ اب ان افراد کے خلاف کارروائی کی جائیگی جنہوں نے اپنے کالے دھن اور بیرونی ممالک میں رکھے گئے اثاثہ جات کا اعلان نہیں کیا ہے ۔ اعلان کے بعد کانگریس نے کہا کہ وزیر اعظم مودی نے کالے دھن پر جو دعوے کئے تھے وہ اب سارے ملک کے سامنے کھوکھلے ثابت ہوگئے ہیں۔ یوم آزادی کے موقع پر وزیر اعظم نے ادعا کیا تھا کہ جملہ 6500 کروڑ روپئے کے کالے دھن کا اعلان کیا گیا ہے ۔ کانگریس ترجمان رندیپ سرجیوالا نے لوک سبھا انتخابات کے دوران وزیر اعظم کی تقاریر کا حوالہ دیا جن میں انہوں نے الزام عائد کیا تھا کہ جملہ 80 لاکھ کروڑ روپئے کا کالا دھن بیرونی ممالک میں چھپایا ہوا ہے ۔ انہوں نے اقتدار سنبھالنے کے اندرون 100 دن کالا دھن واپس لانے کا وعدہ کیا تھا اور یہ وعدہ بھی کیا گیا تھا کہ ہر ہندوستانی کے بینک اکاؤنٹ میں 15 لاکھ روپئے جمع کروائے جائیں گے ۔ وزیر فینانس ارون جیٹلی نے تنقیدوں کو مسترد کردیا اور کہا کہ 3770 کروڑ روپئے کا انکشاف معلنہ سہولت کے تحت کیا گیا ہے جبکہ 6500 کروڑ روپئے الگ ہیں۔ انہوں نے ایک صحافی کے سوال کے جواب میں کہا کہ اس ادعا کو جھوٹ قرار دینے سے پہلے بات کی نوعیت کو سمجھنے کی ضرورت ہے ۔ سکریٹری ریوینیو ہسمکھ ادھیا نے کہا کہ محکمہ ٹیکس کی جانب سے اب ان افراد کے خلاف کارروائی کی جائیگی جنہوں نے اپنے کالے دھن کا افشا نہیں کیا ہے ۔

TOPPOPULARRECENT