Tuesday , September 26 2017
Home / Top Stories / کالے دھن کا پتہ چلانے مزید کارروائی ممکن ، وزیراعظم مودی کا اشارہ

کالے دھن کا پتہ چلانے مزید کارروائی ممکن ، وزیراعظم مودی کا اشارہ

حکومت ہند نئے نوٹ اور عوام کی پریشانی سے واقف ، دیانتدار لوگوں کو فکرمند ہونے کی ضرورت نہیں
کوبے (جاپان)۔12 نومبر ۔(سیاست ڈاٹ کام) کالے دھن کا پتہ چلانے کیلئے مزید کارروائی کا اشارہ دیتے ہوئے وزیراعظم نریندر مودی نے آج کہا کہ وہ جو غیرمحسوب رقم رکھے ہوئے ہیں ، انھیں بخشا نہیں جائے گا اور ایسی کوئی ’’ضمانت‘‘ نہیں کہ 30 ڈسمبر کے بعد مزید اقدامات نہیں کئے جائیں گے ، جو عوام کیلئے بڑی قدر والی کرنسی نوٹوں کو جن سے دستبرداری اختیار کرلی گئی ہے واپس جمع کرادینے کیلئے عوام کو دی گئی قطعی مہلت ہے ۔ تاہم انھوں نے دیانتدار لوگوں کو یقین دلایا کہ انھیں کوئی پریشانی نہیں ہوگی ۔ وہ یہاں ایک تقریب میں ہندوستانی برادری سے مخاطب تھے ۔ ’’میں پھر ایک بار اعلان کردینا چاہتا ہوں کہ اس اسکیم کے اختتام کے بعد ایسی کوئی ضمانت نہیں کہ کچھ بھی نیا متعارف نہیں کیا جائے گا ‘‘۔ انھوں نے 500 روپئے اور ایک ہزار روپئے کی کرنسی نوٹوں سے دستبرداری کے اقدام کو ’’سوچتا ابھیان ‘‘ قرار دیا ۔ وزیر اعظم  نے 500 اور 1000 روپے کے نوٹوں کو بند کرنے کے فیصلے کو ایک بہت بڑی صفائی مہم قرار دیتے ہوئے کہا کہ یہ منصوبہ کسی کو تکلیف دینے کے لئے نہیں ہے اور ان کی حکومت کروڑوں لوگوں کو ممکنہ مشکلات کو دور کرنے کے لئے اقدامات کر رہی ہے ۔ جاپان کے دورے کے آخری مرحلے میں مسٹر مودی نے ملک کے جنوبی حصے میں اوساکا کے نزدیک شہر کوبے میں تارکین وطن سے خطاب میں کہا کہ 8نومبر کی رات کو پانچ سو روپے اور ہزار روپے کے نوٹ بند ہو گئے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ اس منصوبہ کو خفیہ رکھنا بہت اہم تھا، اسے کسی کو بتایا نہیں جا سکتا تھا۔ انہوں نے کہا: ’’میں ہندوستان کے لوگوں کو سلام کرتا ہوں جنہوں نے اس اقدام کی تعریف کی ہے اور تمام مشکلات کے باوجود ہمارا تعاون کیا ہے ‘‘۔ میں لوگوں کی مشکلات پر توجہ دے رہا ہوں، ہماری حکومت اس کا حل تلاش کر رہی ہے ۔ لیکن قانونی طور پر میں یہ کسی کو واقف نہیں کر اسکتا۔ انھوںنے کہا کہ’’یہ فیصلہ کوئی راتوں رات نہیں ہوا۔ سب سے پہلے ہم ایک منصوبہ (رضاکارانہ غیر اعلانیہ آمدنی کے اعلان کی اسکیم) لائے تھے ۔ ایسا نہیں ہے کہ کسی کو کوئی موقع نہیں دیا گیا۔ انہوں نے بڑے پیمانے پر فنڈ اکاؤنٹ کے منصوبہ کا ذکر کرتے ہوئے کہا کہ ہم نے غریبوں سے کہا کہ اگر آپ کے پاس ایک نیا پیسہ بھی نہیں ہے تو بھی آپ کا بینک اکاؤنٹ کھل جائے گا۔ اس پر ملک کے غریبوں نے اپنی امیری دکھائی۔ امیروں کی غربت تو بہت بار دیکھی ہے ‘‘۔ انہوں نے کہاکہ ’’آج میں کہہ سکتا ہوں کہ ہندوستان کا کوئی بھی آدمی پیچھے رہنے والوں میں نہیں ہے‘‘۔ مودی نے یہ وارننگ بھی دی کہ حکومت آزادی کے بعد والے تمام اکاؤنٹس کی جانچ کرے گی اور کچھ بھی غلط پائے جانے پر کسی کو بھی بخشا نہیں جائے گا۔وزیراعظم ہند نے لوگوں سے سوالیہ لہجے میں کہاکہ ’’چوری کا مال نکلنا چاہیے یا نہیں نکلنا چاہیے ؟‘‘۔

انہوں نے عام آدمی اور غریب طبقوں سے ملنے والی حمایت کا شکریہ ادا کرتے ہوئے کہاکہ ’’میں ہندوستان کے لوگوں کا شکریہ ادا کرتا ہوں. …. پہلے گنگا جی میں کوئی ایک روپیہ بھی نہیں رکھتا تھا،مگر اب اُسی گنگا ندی میں ہزار ، پانچ سو کے نوٹ بہہ رہے ہیں‘‘۔ وزیراعظم ہند تارکین وطن کے ساتھ بات چیت کے پروگرام کے بعد اوساکا ہوائی اڈے سے ہندوستان کے لئے روانہ ہوگئے ۔

TOPPOPULARRECENT