Tuesday , August 22 2017
Home / شہر کی خبریں / کال منی ریاکٹ پر اے پی اسمبلی میں ہنگامہ

کال منی ریاکٹ پر اے پی اسمبلی میں ہنگامہ

ایوان کی کارروائی ملتوی، وائی ایس آر کانگریس کے دو ارکان معطل
حیدرآباد ؍ وشاکھاپٹنم ۔ 17 ڈسمبر (سیاست نیوز ؍ پی ٹی آئی) آندھراپردیش اسمبلی میں ’’کال منی ریاکٹ‘‘ پر آج زبردست ہنگامہ آرائی ہوئی اور ایوان کی کارروائی کو ملتوی کرنا پڑا۔ اس کے علاوہ وائی ایس آر کانگریس کے دو ارکان کو دو دن کیلئے معطل کردیا گیا جبکہ پولیس نے اس اسکام کے سلسلہ میں وشاکھاپٹنم میں دو پرائیویٹ فینانس کمپنیوں کے پروموٹرس کو حراست میں لے لیا ہے۔ اس مسئلہ پر آج ایوان کی کارروائی دن بھر کیلئے ملتوی کردی گئی جبکہ اپوزیشن نے قرض پر رقم دینے والوں کی جانب سے انتہائی اذیت رسانی کا الزام عائد کیا اور کہا کہ ان قرض دہندگان کے سیاسی سطح پر روابط بھی پائے جاتے ہیں جو صرف ایک فون کال پر قرض فراہم کرتے ہیں۔ اسپیکر کے سیوا پرساد راؤ نے وائی ایس آر کانگریس ارکان بی سیوا پرساد ریڈی اور ڈی راما لنگیشور راؤ کو دو دن کیلئے معطل کردیا جو ایوان کی کارروائی دکھانے کیلئے رکھے گئے کیمروں میں رکاوٹ کھڑی کررہے تھے۔ وائی ایس آر کانگریس نے اس مسئلہ پر مباحث کا مطالبہ کرتے ہوئے ایوان کی کارروائی روک دی۔ وجئے واڑہ میں اس ریاکٹ کے سلسلہ میں کئی سیاسی افراد کے نام بھی منظرعام پر آئے اور پولیس نے ریاست بھر میں خانگی سودخوروں کے خلاف تلاشی مہم شروع کردی ہے۔ وائی ایس آر کانگریس نے کال منی اسکام پر پیش کردہ تحریک التوا پر مباحث کا مطالبہ کرتے ہوئے ہنگامہ آرائی شروع کردی۔ اسپیکر نے ایوان میں نظم برقرار رکھنے کی احتجاجی ارکان سے خواہش کی لیکن ان پر کوئی اثر نہیں ہوا چنانچہ انہوں نے کارروائی شروع ہونے کے چند منٹ بعد کچھ دیر کیلئے اسے ملتوی کردیا۔ وائی ایس کانگریس کے ارکان وقفہ سوالات کو ملتوی کرکے کال منی اسکام پر مباحث کا مطالبہ کررہے تھے۔ چنانچہ صورتحال کو دیکھتے ہوئے اسپیکر نے دوسری مرتبہ بھی کارروائی ملتوی کردی ہے۔ اس دوران گورنمنٹ وہپ مسٹر کے سرینواس نے کہا کہ حکومت اس مسئلہ پر 18 ڈسمبر کو بیان دے گی لیکن اپوزیشن ارکان ان کے اس تیقن پر مطمئن نہیں تھے۔ اس دوران اسپیکر نے وائی ایس آر کانگریس کے دو ارکان کو مسلسل خلل اندازی اور ٹی وی کیمروں کے روبرو ٹھہر جانے پر دو دن کیلئے معطل کردیا۔

TOPPOPULARRECENT