Friday , August 18 2017
Home / Top Stories / کامیڈین کپل شرما کے رشوت الزامات سے ہنگامہ

کامیڈین کپل شرما کے رشوت الزامات سے ہنگامہ

وزیراعظم کے نام طنزیہ ٹوئیٹ ، کیا یہی اچھے دن ہیں، چیف منسٹر مہاراشٹرا کی مداخلت

ثبوت پیش کرنے ایم این ایس کا مطالبہ
کپل شرما کو ممبئی میں شو کرنے نہیں دیا جائیگا

ممبئی ۔ 9 ستمبر (سیاست ڈاٹ کام) ٹی کے مقبول اسٹانڈپ کامیڈین کپل شرما نے آج یہ الزامات عائد کرتے ہوئے تنازعہ کھڑا کردیا ہیکہ ممبئی میں بلدی ادارہ بی ایم سی کے ایک عہدیدار نے اس سے 5 لاکھ روپئے کی رشوت طلب کی۔ اس کے جواب میں بلدیہ کے عہدیدار کا دعویٰ تھا کہ کامیڈین نے اپنے دفتر میں غیرقانونی تعمیری کام انجام دیا ہے جس کیلئے انہیں دو مہینے قبل ایک نوٹس بھی دی گئی تھی۔ کپل شرما نے اپنے ٹوئیٹر پر آج صبح الزام عائد کرتے ہوئے وزیراعظم نریندر مودی سے طنزیہ ٹوئیٹ کیا اور سوال کیا کہ کیا یہی اچھے دن ہیں جو انہوں نے وعدہ کیا تھا۔ اس ٹوئیٹر بیان کے بعد چیف منسٹر مہاراشٹرا دیویندر فرنویس نے فوری ردعمل ظاہر کرتے ہوئے کپل شرما کے غصہ کو ٹھنڈا کرنے اور یہ تیقن دیا کہ خاطی کے خلاف سخت کارروائی کی جائے گی۔ کپل شرما نے ٹوئیٹ بیان میں اپنی شدید برہمی ظاہر کرتے ہوئے یہ بھی کہا کہ میں گذشتہ 5 سال سے اب تک 15 کروڑ روپئے انکم ٹیکس بھر چکا ہوں۔ اب بی ایم سی والے مجھ سے رشوت طلب کررہے ہیں۔ کپل کے ٹوئیٹر پر 6.22 ملین فالورس چیف منسٹر فرنویس کے علاوہ ہیں۔ اس ٹوئیٹ کو ان کے حامیوں نے تیزی سے سوشل میڈیا میں پھیلا دیا۔ چیف منسٹر مہاراشٹرا، بی ایم سی کے علاوہ شیوسینا بھی جو بی ایم سی میں بی جے پی کے ساتھ مل کر کام انجام دے رہی ہے،

کپل شرما سے کہا کہ وہ اپنے رشوت ستانی کے الزامات سے متعلق تفصیلات پیش کریں اور یہ بتائیں کہ رشوت کس عہدیدار نے طلب کی۔ اپوزیشن کانگریس نے اس موقع سے فائدہ اٹھاتے ہوئے بی جے پی اور شیوسینا پر رشوت خور ہونے کا الزام لگایا۔ یہ تنازعہ چل ہی رہا تھا کہ کپل شرما نے دوبارہ ٹوئیٹ کیا اور اس معاملہ کو اہمیت نہ دینے کی کوشش کی اور کہا کہ وہ کسی ایک پارٹی کو نشانہ نہیں بنا رہے ہیں۔ میں تو صرف رشوت کی لعنت پر اپنی تشویش ظاہر کررہا تھا۔ مجھے چند عہدیداروں سے شکایت ہے۔ کسی بھی سیاسی پارٹی بی جے پی، ایم این ایس، شیوسینا سے کوئی شکایت نہیں ہے۔ ایم این ایس نے کپل شرما سے کہا کہ وہ رشوت خور پارٹی ورکرس یا بلدی عہدیدار کا نام ظاہر کریں۔ اپنے الزامات کا ثبوت پیش کرے ورنہ ان کے خلاف احتجاج کیا جائے گا۔ اگر 14 گھنٹے کے اندر وہ اپنے دعویٰ کا ثبوت نہیں پیش کرسکے اور ان کا بیان غلط پایا گیا تو انہیں بمبئی میں مزید شوٹنگ کرنے کی اجازت نہیں دی جائے گی اور جب تک وہ ہم سے معافی نہیں مانگیں گے ہم انہیں بمبئی میں شو کرنے نہیں دیں گے۔

TOPPOPULARRECENT