Sunday , September 24 2017
Home / شہر کی خبریں / کانسٹیبلس کے تقررات، 5.5 لاکھ درخواستیں

کانسٹیبلس کے تقررات، 5.5 لاکھ درخواستیں

تعلیم یافتہ نوجوانوں کی بھرمار، سب انسپکٹرس کیلئے کم دلچسپی
حیدرآباد ۔ 20 فبروری (سیاست نیوز) ریاست تلنگانہ میں پولیس کانسٹیبلس کی 9281 مخلوعہ جائیدادوں کیلئے 5,36,037 درخواستیں موصول ہوئی تھیں جس کا کسی کو یقین و گمان بھی نہیں تھا اور سونے پر سہاگہ یہ کہ پولیس کانسٹیبلس کیلئے تعلیمی قابلیت صرف ایس ایس سی کا تعین کیا گیا لیکن ایم اے، ایم کام، ایم فارمیسی، بی ٹیک، ایم ٹیک، ایم بی اے کے علاوہ ایم فل اور پی ایچ ڈی کی ڈگری رکھنے والے امیدواروں نے پولیس کانسٹیبلس کیلئے درخواستیں داخل کیں۔ پولیس کانسٹیبلس کے تقررات کے اعلان کے بعد سب انسپکٹر آف پولیس کی جائیدادوں کے تقرر کے سلسلہ میں ریاستی حکومت نے ایک اعلان جاری کیا لیکن تعجب کی بات یہ ہیکہ سب انسپکٹر آف پولیس کی 500 جائیدادوں کیلئے اب تک صرف 27,084 امیدواروں نے ہی درخواستیں داخل کی ہیں جبکہ 3 لاکھ اندازہ تھا اور اعلیٰ تعلیمی قابلیت والے امیدواروں نے سب انسپکٹر آف پولیس کے عہدہ کو اہمیت نہیں دی حالانکہ بیروزگاری دن بہ دن بڑھتی جارہی ہے۔ نوجوان تلاش روزگار میں ایڑی چوٹی کا زور لگا رہے ہیں۔ یہ بات سمجھ میں نہیں آئی کہ سب انسپکٹر آف پولیس کے عہدہ کو لوگ پسند کیوں نہیں کررہے ہیں حالانکہ پولیس کانسٹیبل کے عہدہ کو ہی لوگ پسند نہیں کرتے تھے کیونکہ پولیس کو سخت تربیت کے بعد انہیں دیہی مقامات پر کام کرنا پڑتا تھا اور نکسلائیٹس کا بھی انہیں ڈر تھا۔ کئی لوگ تو پولیس کانسٹیبلس سے اپنی لڑکی کی شادی کرنا پسند نہیں کرتے تھے۔ پولیس ڈپارٹمنٹ کے بارے میں ان کا تصور ہی الگ تھا لیکن اب زمانہ بدل گیا ہے۔ گورنمنٹ کے ملازمین کی تنخواہیں بڑھ گئی ہیں حکومت بدل گئی ہے اور ساتھ ہی ساتھ انسانوں کے سوچنے کا ڈھنگ بھی بدل گیا ہے۔ اعلیٰ تعلیمیافتہ لوگ پولیس کانسٹیبل ہی نہیں چپراسی کی نوکری تک کرنے کو تیار ہیں۔

TOPPOPULARRECENT