Friday , October 20 2017
Home / Top Stories / کانگریس ارکان کی کراس ووٹنگ کے نتیجہ میں تاخیر

کانگریس ارکان کی کراس ووٹنگ کے نتیجہ میں تاخیر

: گجرات راجیہ سبھا انتخابات :
احمد پٹیل کا انتخابی نتیجہ وقار کا مسئلہ،کانگریس کا اپنے دو ارکان کے ووٹ کالعدم کرنے کا مطالبہ ،فیصلہ الیکشن کمیشن کے سپرد

احمدآباد 8 اگسٹ (سیاست ڈاٹ کام) گجرات میں راجیہ سبھا انتخابات کے لئے آج ڈالے گئے ووٹوں کی گنتی تاخیر کا شکار ہوگئی کیوں کہ کانگریس نے الیکشن کمیشن سے رجوع ہوتے ہوئے اپنے ہی دو ارکان اسمبلی کے خلاف شکایت کی جنھوں نے بی جے پی امیدواروں کے حق میں ووٹ ڈالنے کا دعویٰ کیا تھا۔ کانگریس نے اِن دونوں ارکان کے ووٹوں کو کالعدم قرار دینے کا مطالبہ کیا ہے۔ گجرات میں راجیہ سبھا کی تین نشستوں کے لئے آج رائے دہی ہوئی جہاں 4 امیدوار بی جے پی کے صدر امیت شاہ، مرکزی وزیر سمرتی ایرانی اور کانگریس کی صدر سونیا گاندھی کے پولٹیکل سکریٹری احمد پٹیل کے علاوہ کانگریس کے ایک باغی لیڈر بلونت سنہہ راجپوت بی جے پی امیدوار کی حیثیت سے اپنے ہی سابق سیاسی گرو احمد پٹیل کے خلاف مقابلہ کررہے ہیں، جس کے نتیجہ میں صورتحال پیچیدہ ہوگئی ہے بالخصوص احمد پٹیل کا انتخاب اُن کی پارٹی کانگریس کے علاوہ خود حکمراں جماعت بی جے پی کے لئے بھی وقار کا مسئلہ بن گیا ہے۔ احمد پٹیل کی کامیابی اور شکست کے لئے دونوں جماعتیں اپنی تمام تر توانائی صرف کررہے ہیں۔ اِس دوران کانگریس کے دو ارکان رادھو جی پٹیل اور بھولا گوہل نے جو کانگریس کے باغی لیڈر شنکر سنہہ واگھیلا گروپ سے تعلق رکھتے ہیں، بی جے پی کے حق میں ووٹ دینے کا دعویٰ کیا اور کانگریس کے مجاز پولنگ ایجنٹ کے علاوہ بی جے پی کے ایجنٹ کو بھی اپنے بیالٹ پیپر دکھایا۔ اِس بنیاد پر کانگریس نے ان دونوں کے ووٹوں کو کالعدم قرار دینے کا الیکشن کمیشن سے مطالبہ کیا ہے۔

احمدآباد سے موصولہ اطلاع کے بموجب کانگریس کے مطالبہ پر قطعی اور آخری فیصلہ الیکشن کمیشن کی جانب سے کیا جائے گا۔ ڈپٹی چیف منسٹر گجرات نتن پٹیل نے اس کی اطلاع دیتے ہوئے کانگریس پر الزام عائد کیا کہ وہ اپنی شکست تسلیم کرنے کرلینے کے بجائے ایسے مسائل اٹھا رہی ہے جو حقیقت میں کوئی مسئلہ ہی نہیں ہے۔ دریں اثناء نئی دہلی سے موصولہ اطلاع کے بموجب پارٹی قائدین بشمول مرکزی وزراء ارون جیٹلی ، روی شنکر پرساد اور پیوش گوئیل پر مشتمل ایک وفد نے الیکشن کمیشن سے ملاقات کی اور صورتحال کی تفصیلات سے واقف کروایا۔ بعدازاں ایک پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے گوئیل نے کہا کہ الیکشن کمیشن کے عہدیداروں سے ملاقات کے بعد فیصلہ کیا گیا ہے کہ پریسائیڈنگ عہدیداروں کا فیصلہ قطعی ہوگا۔ مرکزی وزیر روی شنکر پرساد نے کہا کہ کانگریس کو انتخابات میں اپنی ناکامی تسلیم کرلینی چاہئے اور الیکشن کمیشن کو فوری رائے شماری کا دوبارہ آغاز کردینا چاہئے۔ این سی پی کے ایک رکن نے احمد پٹیل کی تائید میں ووٹ دینے کا دعویٰ کیا۔ دوسری طرف بی جے پی کی حلیف جے ڈی یو کے رکن نے اپنی پارٹی کی ہدایت کی خلاف ورزی کرتے ہوئے کانگریس امیدوار احمد پٹیل کو ووٹ دیا۔ اِس صورتحال میں انتخابی نتائج دلچسپ ہوگئے ہیں اور سب کی توجہ احمد پٹیل کی نشست پر مرکوز ہوگئی ہے۔ احمد پٹیل کی کامیابی کے لئے 45 ووٹ درکار ہیں۔ کانگریس کے 44 کے منجملہ دو ارکان نے بی جے پی کو ووٹ دیا ہے۔ تاہم دیگر دو جماعتوں کے امیدوار اُن کے حق میں ووٹ دیئے ہیں۔

TOPPOPULARRECENT