Monday , August 21 2017
Home / شہر کی خبریں / کانگریس اور تلگو دیشم کو حکومت پر تنقید کے بجائے تعمیری کردار ادا کرنے کا مشورہ

کانگریس اور تلگو دیشم کو حکومت پر تنقید کے بجائے تعمیری کردار ادا کرنے کا مشورہ

ہر کام پر نکتہ چینی مخالفین کا شیوہ ، ٹی آر ایس ارکان اسمبلی کا سخت ردعمل
حیدرآباد 10 اگست (سیاست نیوز) ٹی آر ایس ارکان اسمبلی جی بالراجو اور جیون ریڈی نے کانگریس اور تلگودیشم قائدین پر الزام عائد کیا کہ وہ حکومت کے ہر کام کی مخالفت کو اپنا شیوہ بناچکے ہیں۔ میڈیا کے نمائندوں سے بات چیت کرتے ہوئے ارکان اسمبلی نے عثمانیہ ہاسپٹل کی قدیم عمارت کے انہدام اور نئی عصری عمارت کی تعمیر سے متعلق حکومت کے فیصلہ کی بھر پور تائید کی ۔ انہو ںنے کہا کہ کانگریس اور بعض دیگر جماعتیں غیر ضروری طور پر حکومت کی اس تجویز کی مخالفت کررہے ہیں ۔ انہو ںنے کہا کہ عوام کو بہتر طبی سہولتوں کی فراہمی کیلئے حکومت نے یہ فیصلہ کیا ہے ۔ ارکان اسمبلی نے کہا کہ غریب عوام کو بہتر سہولتوں کے ساتھ نئی عمارت کی تعمیر حکومت کا منصوبہ ہے ۔ انہوں نے کہا کہ اپوزیشن جماعتوں کو صرف تنقیدوں کے بجائے حکومت کے بہتر کاموں کی ستائش کرنی چاہئے ۔ بالراجو نے تلگودیشم اور کانگریس قائدین کو سخت تنقید کا نشانہ بنایا اور کہا کہ ان قائدین کو پہلے ہی عوام نے مسترد کردیا ہے اور اگر وہ اسی طرح مخالفت جاری رکھیں گے تو عوام انہیں سبق سکھائیں گی ۔ انہوں نے الزام عائد کیا کہ تلگودیشم تلنگانہ قائدین نے تلنگانہ کی عزت نفس کو چندرا بابو نائیڈو کے پاس گروی رکھ دیا ہے۔ ای دیا کر راو ‘ریونت ریڈی اور دیگر قائدین آندھرائی قائدین کے ایجنٹ کی طرح کام کررہے ہیں اور ہر مسئلہ پر تنقید کرنا ان کی عادت بن چکی ہے ۔ انہوں نے کہا کہ چندرا بابو نائیڈو تلنگانہ ریاست کے پراجکٹس کی تکمیل کی راہ میں رکاوٹ پیدا کررہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ مرکزی حکومت کو تلنگانہ پراجکٹس کے خلاف مکتوب روانہ کرتے ہوئے چندرا بابو نائیڈو تلنگانہ کی ترقی روکنا چاہتے ہیں ۔ تلگودیشم قائدین کی جانب سے خشک سالی سے متاثر علاقوں میں یاترا کے منصوبہ کی مخالفت کرتے ہوئے ٹی آر ایس رکن اسمبلی نے کہا کہ تلگودیشم دور حکومت میں کسانوں کی خودکشی کے وقت یہ قائدین کیوں خاموش تھے ۔ انہوںنے کہا کہ خشک سالی کی صورتحال سے نمٹنے کیلئے چیف منسٹر نے ہریتا ہرم پروگرام کا آغاز کیا ہے ۔ انہو ںنے کہا کہ انتخابات میں عوامی فیصلے کو بھول کر تلگودیشم قائدین دوبارہ عوامی ہمدردی حاصل کرنے کی کوشش کررہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ تلنگانہ کے پراجکٹ کے خلاف چندرا بابو نائیڈو نے مرکزی حکومت کو جو خطوط روانہ کئے ہیں ان سے دستبرداری کیلئے تلگودیشم قائدین کو دباو بنانا چاہئے ۔ رکن اسمبلی جیون ریڈی نے قائد اپوزیشن جانا ریڈی کو مشورہ دیا کہ وہ حکومت پر تنقیدوں کے بجائے تعمیری اپوزیشن کا رول ادا کرے ۔ انہوں نے کہا کہ کانگریس دور حکومت میں تلنگانہ کی ترقی کو نظر انداز کردیا گیا تھا لیکن کانگریس قائدین خاموشی اختیار کئے ہوئے تھے ۔ اب جبکہ ٹی آر ایس حکومت ہر شعبہ میں ریاست کی ترقی کے اقدامات کررہی ہے ۔ کانگریس قائدین غیر ضروری تنقیدوں کے ذریعہ سستی شہرت حاصل کرنا چاہتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ سنہرے تلنگانہ کی تشکیل میں کانگریس قائدین کو اپنا حصہ ادا کرنا چاہئے۔

TOPPOPULARRECENT