Saturday , August 19 2017
Home / شہر کی خبریں / کانگریس قائدین راجگوپال ریڈی اور جی نارائن ریڈی کے درمیان جھڑپ

کانگریس قائدین راجگوپال ریڈی اور جی نارائن ریڈی کے درمیان جھڑپ

ایکدوسرے کو بندوق نکال لینے کی دھمکی ، ڈگ وجئے سنگھ مرکزی کانگریس قائد ششدر
حیدرآباد ۔ 21 ۔ اپریل : ( سیاست نیوز ) : اے آئی سی سی جنرل سکریٹری ڈگ وجئے سنگھ کی موجودگی میں کانگریس کے قائدین راجگوپال ریڈی اور جی نارائن ریڈی کے درمیان جھڑپ ہوگئی ۔ دونوں قائدین نے ایک دوسرے کو بندوق نکال لینے کی دھمکی دے دی ۔ صورتحال پر ڈگ وجئے سنگھ حیرت زدہ رہ گئے ۔ اتم کمار ریڈی اور جانا ریڈی نے درمیان میں مداخلت کرتے ہوئے حالات کو مزید بگڑنے سے بچالیا ۔ واضح رہے کہ ڈگ وجئے سنگھ دو دن سے حیدرآباد میں قیام کرتے ہوئے گاندھی بھون میں نئے اضلاع کے کانگریس صدور کا انتخاب کرنے کے لیے پارٹی کے اضلاعی صدور اور سینئیر قائدین کی رائے حاصل کررہے ہیں ۔ جب ضلع نلگنڈہ کا مسئلہ آیا تو اضلاع کی تنظیم جدید کے بعد بھونگیر ضلع کی صدارت کی بات آئی کانگریس کے رکن قانون ساز کونسل کومٹ ریڈی راجگوپال ریڈی نے بھونگیر ضلع کانگریس کی صدارت کے لیے ان کی جانب سے پیش کردہ نام کو اہمیت دینے کا مطالبہ کیا ۔ ان کا استدلال تھا کہ وہ ماضی میں بھونگیر لوک سبھا کی نمائندگی کرچکے ہیں اور اب بھی پارٹی کی سرگرمیوں میں غیر معمولی رول ادا کررہے ہیں ۔ بھونگیر سے تعلق رکھنے والے خازن تلنگانہ پردیش کانگریس کمیٹی جی نارائن ریڈی نے اس پر سخت اعتراض کرتے ہوئے کہا کہ ضلع نلگنڈہ کی تنظیم جدید ہوچکی ہے ۔ کومٹ ریڈی برادرس ضلع نلگنڈہ تک محدود رہے ۔ انہیں بھونگیر یا دوسرے اضلاع میں مداخلت کرنے کی ضرورت نہیں ہے ۔ اس پر دونوں قائدین کے درمیان تلخ بحث جھڑپ میں تبدیل ہوگئی اور دونوں قائدین نے ایک دوسرے کے خلاف غیر پارلیمانی الفاظ کا استعمال کیا ۔ بات یہاں تک بڑھ گئی کہ دونوں نے ایک دوسرے کو بندوق نکال لینے کی دھمکی دے ڈالی ۔ ڈگ وجئے سنگھ حالات سنگین ہوجانے پر حیرت زدہ ہوگئے کیوں کہ دونوں قائدین اتنے برہم ہوگئے تھے کہ کسی کی نہیں سن رہے تھے اور بار بار دیکھ لینے کی دھمکی دے رہے تھے ۔ اجلاس میں موجود ضلع نلگنڈہ سے تعلق رکھنے والے صدر تلنگانہ پردیش کانگریس کمیٹی کیپٹن اتم کمار ریڈی قائد اپوزیشن کے جانا ریڈی ششدر رہ گئے ۔ دونوں قائدین نے درمیان میں مداخلت کرتے ہوئے حالات کو قابو میں کرنے میں اہم رول ادا کیا ۔ پرامن مذاکرات تشدد کا رخ اختیار کرنے پر ڈگ وجئے سنگھ نے کے راجگوپال ریڈی اور جی نارائن ریڈی پر سخت ناراضگی کا اظہار کرتے ہوئے ڈسپلن اور پارٹی وفاداری پر قائم رہنے کی ہدایت دیتے ہوئے کہا کہ کانگریس کے قائدین میں اتحاد نہیں ہے تو وہ حکمران جماعت کا کس طرح مقابلہ کرپائیں گے ۔ ہر مسئلہ کو سنجیدگی اور مذاکرات سے حل کرنے کا مشورہ دیا ۔۔

TOPPOPULARRECENT