Wednesday , August 23 2017
Home / شہر کی خبریں / کانگریس قائدین کو جیل روانہ کرنے چیف منسٹر کو چیلنج

کانگریس قائدین کو جیل روانہ کرنے چیف منسٹر کو چیلنج

ٹی آر ایس جاہلوں کی پارٹی ، مدھوگوڑ یشکی سابق ایم پی کانگریس کا ردعمل
حیدرآباد ۔ 25 ۔ اگست : ( سیاست نیوز) : ترجمان آل انڈیا کانگریس کمیٹی و سابق رکن پارلیمنٹ مسٹر مدھو گوڑ یشکی نے کہا کہ مہاراشٹرا کے آبی معاہدہ سے ماموں ۔ بھانجے نے تلنگانہ عوام کی آنکھوں میں دھول جھونکتے ہوئے مالا مال ہونے کا منصوبہ تیار کیا ہے ۔ وہ اپنے الزامات پر قائم ہے ۔ ہمت ہے تو مقدمہ درج کرتے ہوئے جیل روانہ کرنے کا چیف منسٹر کو چیلنج کیا ۔ آج گاندھی بھون میں پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے انہوں نے ٹی آر ایس کو جاہلوں کی جماعت قرار دیتے ہوئے کہا کہ ایسا لگتا ہے کل چیف منسٹر تلنگانہ نے نشے میں بات کی ہے ۔ مہاراشٹرا کو فائدہ پہونچا کر تلنگانہ میں جشن منانا معنی خیز ہے ۔ کے سی آر ۔ فرنویس معاہدہ سے ایک روپیہ خرچ کیے بغیر مہاراشٹرا کو 20 فیصد پانی دینے سے اتفاق کیا گیا ہے یعنی 13.8 ٹی ایم سی پانی مہاراشٹرا کو مفت میں حاصل ہورہا ہے ۔ جشن مہاراشٹرا کو اور غم تلنگانہ کو منانا چاہئے ۔ لیکن اپنی غلطیوں پر پردہ ڈالنے کے لیے ٹی آر ایس کی جانب سے جشن مناتے ہوئے عوام کو گمراہ کرنے کی کوشش کی گئی ۔ کانگریس کے دور حکومت میں ہی تمڈی پٹی پر 152 بلند میٹر بیارج بنانے سے اصولی طور پر اتفاق ہوگیا تھا ۔ اس کے لیے 12 منظوریاں حاصل ہوچکی تھی اور حکومت کی جانب سے 9 ہزار کروڑ روپئے خرچ بھی کیا گیا تھا ۔ مسٹر مدھوگوڑ یشکی نے کہا کہ مستقبل میں کے سی آر اور ہریش راؤ ہی جیل جائیں گے ۔ وہ اپنے الزامات پر قائم ہے اور انہیں جیل جانے کا کوئی ڈر نہیں ہے ۔ اگر پراجکٹس کی تعمیر شفاف ہے تو حکومت اس کی سی بی آئی تحقیقات کرائے ۔ واٹر گرڈ کے لیے قطرہ پانی نہیں ہے تاہم 6 ہزار کیلو میٹر تک پائپ لائن بچھائی جارہی ہے ۔۔

TOPPOPULARRECENT