Wednesday , August 23 2017
Home / شہر کی خبریں / کانگریس قائدین کو چیف منسٹر کے خلاف الزام تراشی روک دینے انتباہ

کانگریس قائدین کو چیف منسٹر کے خلاف الزام تراشی روک دینے انتباہ

مدھو یاشکی گوڑ کا نظام آباد میں داخلہ بند کردیا جائیگا ۔ ٹی آر ایس رکن اسمبلی جیون ریڈی کا رد عمل
حیدرآباد۔24 اپریل (سیاست نیوز) ٹی آر ایس کے رکن اسمبلی جیون ریڈی نے کانگریس قائدین کو متنبہ کیا کہ وہ چیف منسٹر کے چندر شیکھر رائو کے خلاف شخصی الزام تراشی سے گریز کریں ورنہ ٹی آر ایس قائدین اسی انداز میں جواب دینے کی صلاحیت رکھتے ہیں۔ میڈیا کے نمائندوں سے بات چیت کرتے ہوئے اے جیون ریڈی نے کہا کہ عوامی بھلائی اور ترقی کے کاموں میں منہمک چیف منسٹر کے چندر شیکھر رائو اور ریاستی وزراء پر تنقید کا کانگریس قائدین کو کوئی حق نہیں ہے۔ انہوں نے کہا کہ کانگریس قائدین جو خود اپنے دورِ حکومت میں بے قاعدگیوں میں ملوث رہے، آج وہ حکومت پر تنقیدیں کررہے ہیں۔ جیون ریڈی نے کہا کہ وزراء ہریش رائو، کے ٹی راما رائو اور رکن پارلیمنٹ کویتا پر بدعنوانیوں کے الزامات کو ہرگز برداشت نہیں کیا جائیگا۔ انہوں نے کہا کہ کانگریس کے مدھو یاشکی گوڑ نے اگر اپنی الزام تراشی بند نہیں کی تو انہیں تلنگانہ میں گھومنے نہیں دیا جائے گا۔ اور نظام آباد ضلع میں داخلہ بند ہوجائے گا۔ جیون ریڈی نے کہا کہ کانگریس کے سینئر قائد جی پرکاش رائو نے مدھو یاشکی گوڑ پر امریکہ میں رہتے ہوئے جن بے قاعدگیوں کا الزام عائد کیا کہ پہلے ان کی تحقیقات ہونی چاہئے۔ انہوں نے کہا کہ نظام آباد کے رکن پارلیمنٹ کی حیثیت سے 10 سال میں مدھو یاشکی گوڑ نے عوام کی بھلائی کو نظرانداز کردیا تھا۔ انہوں نے رکن پارلیمنٹ ترقیاتی فنڈ کو مکمل خرچ نہیں کیا اس کے برخلاف کویتا نے گزشتہ تین برسوں میں نظام آباد کو ترقی کی راہ پر گامزن کردیا ہے۔ انہوں نے 800 کروڑ روپئے سے نئی ریلوے لائین کی منظوری حاصل کی۔ اس کے علاوہ کسانوں کی بھلائی کے لیے بھی مرکزی و ریاستی حکومتوں سے کئی اسکیمات حاصل کئے ہیں۔ جیون ریڈی نے کہا کہ کانگریس قائدین کو حکومت پر تنقید کا کوئی حق نہیں کیوں کہ کانگریس دور حکومت بدعوانیوں سے پررہا ہے۔ اسی دوران گورنمنٹ وہپ این اوڈیلو نے میڈیا کے نمائندوں سے بات چیت کرتے ہوئے تلگودیشم رکن اسمبلی ریونت ریڈی کو تنقید کا نشانہ بنایا اور کہا کہ تلگودیشم دور حکومت میں آبپاشی پراجیکٹس اور کسانوں کو مکمل نظرانداز کردیا گیا تھا۔ لیکن اب کسانوں سے جھوٹی ہمدردی کا اظہار کیا جارہا ہے۔ انہوں نے کہا کہ تلنگانہ کے عوام نے تلگودیشم کو مسترد کردیا اور تلنگانہ میں پارٹی کا کوئی مستقبل نہیں ہے۔ ایسے میں ریونت ریڈی جیسے قائدین کی بیان بازی سے تلگودیشم کو کوئی فائدہ نہیں ہوگا۔ انہوں نے تلنگانہ میں تلگودیشم کو محض ایک قصہ پارینہ قرار دیا اور کہا کہ مخالف تلنگانہ عناصر کو عوام نے سبق سکھایا ہے۔

TOPPOPULARRECENT