Wednesday , September 20 2017
Home / شہر کی خبریں / کانگریس قائدین کو گروپ بندیوں سے اجتناب کا مشورہ

کانگریس قائدین کو گروپ بندیوں سے اجتناب کا مشورہ

پارٹی کو مستحکم کرنے پر زور ، صدر آل انڈیا کانگریس اقلیت کا بیان
حیدرآباد ۔ 21 ۔ اگست : ( سیاست نیوز ) : صدر آل انڈیا کانگریس اقلیت ڈپارٹمنٹ خورشید احمد سعید نے پارٹی قائدین کو احساس کمتری سے بالاتر ہو کر پارٹی کے استحکام کے ساتھ اقلیتوں کو پارٹی سے جوڑنے کا مشورہ دیا ۔ آپسی اختلافات اور گروپ بندیوں کو فراموش کرتے ہوئے اپنی صفوں میں اتحاد پیدا کرنے پر زور دیا ۔ گاندھی بھون میں کانگریس کے اقلیتی قائدین سے جائزہ اجلاس طلب کرتے ہوئے ان خیالات کا اظہار کیا ۔اس موقع پر صدر تلنگانہ پردیش کانگریس اقلیت ڈپارٹمنٹ محمد خواجہ فخر الدین ، نائب صدر نشین محمد معراج خان ، محمد اعجاز خاں ، محمد خواجہ غیاث الدین ، جنرل سکریٹری تلنگانہ پردیش کانگریس کمیٹی ایس کے افضل الدین ترجمان سید نظام الدین ، صدر گریٹر حیدرآباد کانگریس اقلیت ڈپارٹمنٹ شیخ عبداللہ سہیل ، ترجمان اقلیت ڈپارٹمنٹ سید فاروق پاشاہ قادری سابق کارپوریٹرس محمد غوث ، معراج محمد خاں ، کانگریس کے قائدین عبدالکبیر ، سید شہاب الدین کے علاوہ دیگر موجود تھے ۔ خورشید احمد سعید نے کہا کہ ملک میں اقلیتوں بالخصوص مسلمانوں کے لیے حالت تنگ ہورہے ہیں ۔ لیکن اس سے مسلمانوں کو ڈرنے گھبرانے کی ضرورت نہیں ہے کیوں کہ کانگریس پارٹی فرقہ پرستی کے خلاف چٹان کی طرح ٹھہری ہوئی ہے ۔ کانگریس کو استحکام کرنا اور اقلیت ڈپارٹمنٹ کو مضبوط بنانے کی اقلیتیں بھی ذمہ داری قبول کریں ۔ دشمنوں سے مقابلہ کرنے کے لیے سب سے پہلے کانگریس کے اقلیتیں اپنی صفوں میں اتحاد پیداکرنے کی ضرورت ہے ۔ عوامی اور پارٹی کے مفادات کو پیش نظر رکھتے ہوئے کانگریس کے اقلیتی قائدین اتحاد کا مظاہرہ کریں ۔ شہر کی چھوٹی جماعت سے تعلق رکھنے والے دونوں برادرس ملک کے مختلف ریاستوں کا دورہ کرتے ہوئے مسلمانوں کے ووٹوں کو تقسیم کرنے اور ہندو ووٹوں کو متحد کرنے میں اہم رول ادا کرہے ہیں ۔ محمد خواجہ فخر الدین نے ڈپارٹمنٹ کی کارکردگی پر روشنی ڈالی اور شہر میں شیخ عبداللہ سہیل عوام کے لیے دستیاب رہنے کا دعویٰ کیا ۔ محمد غوث نے کئی تجاویز پیش کرتے ہوئے کہا کہ وہ بھی مجلس سے استعفیٰ دے کر کانگریس میں شامل ہوئے ہیں ۔ مجلس کو اور اس کے قائدین کو پرانے پل تک محدود رکھنے کا ہنر اچھی طرح جانتے ہیں ۔ مگر ہمیں کانگریس سے ضمانت چاہئے کہ کانگریس پارٹی مستقبل میں کبھی مجلس سے سیاسی مفاہمت نہیں کرے گی ۔ کانگریس پارٹی کا مستقبل روشن ہے ۔ لوگ بڑی امیدوں سے کانگریس کی طرف دیکھ رہے ہیں ۔ کانگریس پارٹی اپنی سیاسی حکمت عملی تبدیل کریں بالخصوص اقلیت ڈپارٹمنٹ تمام اقلیتوں کو ایک پلیٹ فارم پر اکٹھا کرتے ہوئے کام کریں ۔ معراج محمد خاں نے ساتھ دینے پر مجلس سے ٹکر لینے کا تیقن دیا ۔ محمد خواجہ غیاث الدین نے اسٹیٹ اقلیت قیادت پر انہیں پارٹی کے پروگرامس میں نظر انداز کرنے کا الزام عائد کرتے ہوئے کہا کہ ان کی جانب سے وقت نہ دینے پر مسلمان مجلس کے دفتر پہونچنے کا دعویٰ کیا ۔ جس پر محمد خواجہ فخر الدین نے کہا کہ اضلاع میں پارٹی کا بہت اچھا کام ہورہا ہے ۔ شہر میں شیخ عبداللہ سہیل موجود ہیں جو کام کررہے ہیں ۔ شیخ عبداللہ سہیل نے بھی ردعمل کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ وہ تمام عید و تہواروں میں پرانے شہر میں موجود ہیں اور کام کررہے ہیں ۔ خورشید احمد سعید نے کہا کہ کانگریس پارٹی سے وابستہ ہیں تو دعوت دینے کا انتظار نہ کریں پارٹی کے پروگرامس میں شریک ہو کر کانگریس اور اقلیت ڈپارٹمنٹ کو استحکام کرنے کا مشورہ دیا اور کہا کہ وہ سب کے کام سے وہ بخوبی واقف ہیں ۔ اب وقت ایک دوسرے کو برا بھلا کہنے کا نہیں ہے بلکہ آپس میں اتحاد کا مظاہرہ کرنے کا ہے ۔ تلنگانہ پردیش کانگریس اقلیت ڈپارٹمنٹ کی کارکردگی اطمینان بخش ہے ۔۔

TOPPOPULARRECENT