Sunday , June 25 2017
Home / سیاسیات / کانگریس کو پارلیمنٹ کے طور طریقے پر نصیحت کرنے کا کوئی حق نہیں : بی جے پی

کانگریس کو پارلیمنٹ کے طور طریقے پر نصیحت کرنے کا کوئی حق نہیں : بی جے پی

اتراکھنڈ میں انتخابی جلسہ عام سے قومی صدر بی جے پی امیت شاہ کا خطاب، راہول گاندھی پر تنقید، وزیراعظم کے تبصرہ کا دفاع
نیو تہیری (اتراکھنڈ) 9 فروری (سیاست ڈاٹ کام) اپوزیشن کی جانب سے وزیراعظم نریندر مودی کی سابق وزیراعظم منموہن سنگھ پر ’’برساتی‘‘ کے طرز پر شوروغل کا جواب دیتے ہوئے صدر بی جے پی امیت شاہ نے آج راہول گاندھی کو اُس اصطلاح کی یاد دہانی کی جو اُن کی والدہ مودی کے خلاف ماضی میں استعمال کرتی آئی ہیں۔ امیت شاہ نے کہاکہ وزیراعظم کے اپنے پیشرو کے خلاف تبصرے میں کوئی غلط بات نہیں ہے۔ مودی جی نے کوئی غلط بات نہیں کی ہے۔ 12 لاکھ کروڑ روپئے کے اسکامس یو پی اے کے دور اقتدار میں پیش آئے جن میں کانگریس اور سابق وزیراعظم دونوں بھی ملوث تھے۔ ایک انتخابی جلسہ عام سے خطاب کرتے ہوئے اُنھوں نے کہاکہ اپوزیشن نے کل وزیراعظم کے خلاف برہمی ظاہر کی ہے کیوں کہ اُنھوں نے پارلیمنٹ میں اپنے پیشرو کے خلاف طنز کرتے ہوئے ’’برساتی‘‘ کا تبصرہ کیا تھا۔ کیوں کہ سابق وزیراعظم ایک صاف ستھری شبیہہ رکھتے ہیں۔ امیت شاہ نے کہاکہ وہ واحد شخص ہیں جنھیں غسل خانے میں برساتی پہن کر نہانے کا فن آتا ہے۔ امیت شاہ نے کہاکہ کانگریس کو اِس پر اعتراض نہیں ہونا چاہئے تھا کیوں کہ یہ تبصرہ بالکل درست ہے۔ جہاں تک لب و لہجہ کا سوال ہے عوام کو اِس کی فکر نہیں ہے۔ کانگریس نے سب کو پیچھے چھوڑ دیا ہے۔ انھوں نے راہول گاندھی کو یاد دہانی کی کہ اُن کی والدہ سونیا گاندھی مودی کو چند سال پہلے تک کس طرح مخاطب کیا کرتی تھیں۔

حال ہی میں قائد اپوزیشن لوک سبھا اور اُن کے اپنے خون کی دلالی کے تبصرہ پر جبکہ وزیراعظم نے سرجیکل حملے کروائے تھے، ہنگامہ کھڑا ہوگیا تھا۔ صدر بی جے پی واضح طور پر موت کا سوداگر تبصرہ کا حوالہ دے رہے تھے جو سونیا گاندھی نے نریندر مودی پر کیا تھا۔ امیت شاہ نے کہاکہ راہول گاندھی پہلے شخص تھے جنھوں نے منموہن سنگھ کے خلاف برسر عام آرڈیننس کو چاک کرکے جس کی سابق وزیراعظم نے منظوری دی تھی، اپنی برہمی کا اظہار کیا تھا۔ راہول گاندھی کے بار بار اس مطالبہ پر کہ وہ مودی حکومت کی کارکردگی کی رپورٹ پیش کررہے ہیں، صدر بی جے پی نے کہاکہ اب وقت آگیا ہے کہ اتراکھنڈ میں کانگریس گزشتہ پانچ سال سے اپنے دور اقتدار میں کیا کرچکی ہے، اُس کی رپورٹ پیش کریں۔ بی جے پی قائد نے کہاکہ راہول گاندھی پرزور انداز میں جو کچھ وزیراعظم کہتے ہیں اُس کو دہراتے ہیں۔ ہم نے ملک کو ایک ایسا وزیراعظم دیا ہے جن کی آواز سنی جارہی ہے۔ قبل ازیں صرف آپ کی اور آپ کی والدہ کی آواز سنائی دیتی تھی۔ امیت شاہ انتخابی جلسہ میں سونیا گاندھی کا حوالہ دے رہے تھے۔ کانگریس اور نائب صدر کانگریس سے اُنھوں نے مطالبہ کیاکہ مودی کا رپورٹ کارڈ طلب کرنے سے پہلے اپنے 60 سالہ دور اقتدار کا رپورٹ کارڈ پیش کرنا چاہئے۔ نئی دہلی سے موصولہ اطلاع کے بموجب مرکزی وزیر برائے شہری ترقیات ایم وینکیا نائیڈو نے ایک پریس کانفرنس میں کانگریس پر تنقید کرتے ہوئے کہاکہ کانگریس کو کوئی اخلاقی حق نہیں پہنچتا کہ ہمیں پارلیمنٹ کے آداب اور معیاروں کے بارے میں نصیحت کرے۔ کانگریس کو خود اپنے کردار کا جائزہ لینا چاہئے۔ بعد میں وزیراعظم کے ایوان کو مخاطب کرنے کے بارے میں تبصرہ کرنا چاہئے۔ نائیڈو نے کہاکہ درحقیقت ایوان سے معذرت خواہی اپنے کردار کے لئے خود کانگریس کو کرنی چاہئے۔ عوام سے، پارلیمنٹ سے اور وزیراعظم سے معذرت خواہی کرنی چاہئے۔

Leave a Reply

TOPPOPULARRECENT