Tuesday , September 26 2017
Home / سیاسیات / کانگریس کی وراثت پر نریندر مودی حکومت کا ایک اور حملہ

کانگریس کی وراثت پر نریندر مودی حکومت کا ایک اور حملہ

اندرا گاندھی نیشنل سنٹر فار دی آرٹس کی انتظامی کمیٹی کی تشکیل جدید
نئی دہلی۔/14 اپریل، ( سیاست ڈاٹ کام ) نہرو میموریل سوسائٹی کے بعد نریندر مودی حکومت نے آج اندرا گاندھی نیشنل سنٹر فار دی آرٹس کی انتظامی کمیٹی کی تشکیل جدید کی ہے جس کا سربراہ سابق سفارتکار چنمیا گھڑے خاں کی جگہ ممتاز ہندی جرنلسٹ رام بہادر رائے کو نامزد کیا گیا ہے۔ وزارت ثقافت نے 20رکنی بورڈ آف ٹرسٹیز کے صدر نشین کی حیثیت سے ہندی روز نامہ’ جن ستہ ‘ کے سابق ایڈیٹر رائے کے تقرر کا اعلان کیا ہے۔ مذکورہ سنٹر کو کانگریس کی وراثت تصور کیا جاتا ہے جسے 1987ء میں اسوقت کے وزیر اعظم راجیو گاندھی نے آرٹس کے شعبہ میں تحقیق اور تخلیق کیلئے قائم کیا تھا اور یو پی اے کے دور حکومت میں گھڑے خاں کو صدر نشین بنایا گیا تھا۔ سرکاری اعلامیہ میں بتایا گیا کہ IGNCA کی تشکیل جدید جو کہ وزارت ثقافت کے تحت ایک خود مختار ادارہ ہے استقدامی اثر کے ساتھ نافذ العمل ہوگی۔ رائے کے علاوہ بورڈ کے دیگر 19ارکان میں کلاسیکل ڈانسر سونا امان سنگھ اور پدما سبرامنیم، نغمہ نگار پرسون جوشی اور آرٹسٹ واسودیو کامت شامل ہیں۔ اس بورڈ میں ایک کلچرل سکریٹری، ایڈیشنل سکریٹری، وزارت ثقافت کے مالیاتی مشیر اور ممبر سکریٹری بحیثیت ٹرسٹی ہوں گے۔ پدما سبرانیم واحد رکن ہیں

 

جنہیں بورڈ آف ٹرسٹیز میں دوبارہ شامل کیا گیا ہے۔ وزیر ثقافت مہیش شرما نے بتایا کہIGNCA کے مینجمنٹ میں پہلی مرتبہ ردوبدل نہیں کیا گیا۔ سابق میں سال 2007، 2004، 2000 میں بھی بورڈ آف ٹرسٹیز کی تشکیل جدید کی گئی تھی ۔ انہوں نے کہا کہ یہ ایک سلسلہ عمل ہے اور تبدیلیاں جاری رہیں گی۔ مسٹر شرما نے یہ امید ظاہر کی کہ حکومت بدلتے ہوئے حالات میں ملک کی تہذیب، وراثت، فن اور ادب کو فروغ دینے کیلئے پیشقدمی کرے گی۔ انہوں نے کہا کہ نئے صدر نشین رام بہادر رائے نہ صرف صحافی ہیں بلکہ مہاتما گاندھی اور جئے پرکاش نارائن کے نظریات سے ہم آہنگ ہیں۔ جبکہ بورڈ آف ٹرسٹیز کیلئے نامزد 20ارکان بھی اپنے اپنے شعبوں کے ماہر ہیں۔دریں اثناء کانگریس لیڈر رینوکا چودھری نے کہا کہ اس مسئلہ کو سیاسی رنگ نہیں دیا جائے گا لیکن پارٹی کو یہ دریافت کرنے کا حق ہے کہ سنٹر کی تشکیل جدید آیا وزارت ثقافت اور سیاحت کی قومی ترجیح ہے جبکہ اسے بیرونی سیاحوں کو ترغیب دینے کیلئے توجہ مرکوز کرنے کی ضرورت ہے۔ صدرنشین کے عہدہ سے بیدخل گھڑے خاں نے کہا کہ ٹرسٹ کی تشکیل جدید کوئی معمہ نہیں ہے کیونکہ تمام پیشرو حکومتوں نے سابق میں ایسا ہی کیا تھا۔

شیروں کی آبادی میں اضافہ کیلئے ہندوستان کا تعاون
نئی دہلی۔/14 اپریل، ( سیاست ڈاٹ کام ) وزارت ماحولیات نے آج شیروں سے محروم ممالک کو جنگلی جانوروں کے تحفظ اور دوبارہ آباد کرنے میں تعاون کی پیشکش کی ہے۔ شیروں کے تحفظ پر ایشیاء منسٹریل کانفرنس کے اختتامی اجلاس کو مخاطب کرتے ہوئے وزیر ماحولیات پرکاش جاویڈکر نے کہا کہ ان ممالک میں جہاں پر شیروں کی آبادی تقریباً ناپید ہوگئی ہے شیروں کی بریڈنگ، جنگلی جانووں کی محفوظ پناہ گاہ کے قیام کیلئے ہندوستان ممکنہ تعاون کیلئے تیار ہے۔ تین روزہ کانفرنس میں شیروں کی محفوظ پناہ گاہ رکھنے والے ممالک کے نمائندوں نے جنگلی جانوروں کی گھٹتی ہوئی آبادی پر تبادلہ خیال کیا اور شیروں کے تبادلے کیلئے دہلی اعلامیہ پر دستخط کئے اور ممنوعہ جنگلی جانوروں کے شکار پر سخت کارروائی کا عہد کیا گیا۔

TOPPOPULARRECENT