Monday , August 21 2017
Home / سیاسیات / کانگریس کے اقدامات کی وجہ سے عوام پارٹی سے دور

کانگریس کے اقدامات کی وجہ سے عوام پارٹی سے دور

مرکزی وزیر فینانس ارون جیٹلی کا الزام ‘ پارٹی کارکنوں کے اجلاس سے خطاب
کانپور ۔  22مئی ( سیاست ڈاٹ کام ) کانگریس کی ’’ خاندانی سیاست‘‘ پر تنقید کرتے ہوئے مرکزی وزیر فینانس ارون جیٹلی نے آج کہا کہ ’’ خاندان کی کشش‘‘ ختم ہوچکی ہے ۔ پارٹی کو اس کی قیمت چکانا پڑرہی ہے ۔ جب لوگ خاندان سے متاثر ہوتے تھے وہ دور اب گذر چکا ہے کیونکہ کانگریس پارٹی کو اس رویہ کی قیمت چکانا پڑرہی ہے ۔ ارون جیٹلی نے بی جے پی کارکنوں کے اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے یہ تبصرہ کیا اور کہا کہ پارلیمنٹ میں کانگریس رکاوٹ پیدا کرنے والی اپوزیشن کا کردار ادا کررہی ہے اس سے پارٹی کے مقصد کو کچھ زیادہ فائدہ حاصل نہیں ہوا ۔ انہوں نے کہا کہ کانگریس ایسے مقامات پرجاتی ہے جہاں قوم دشمن نعرہ بازی کی جاتی ہے اور وہاں سیاست کرنے کی کوشش کرتی ہے‘ کیا اس قسم کی کارروائیوں سے عوام کو پارٹی کی جانب راغب کیا جاسکتا ہے ۔ وہ واضح طور پر جواہر لال نہرو یونیورسٹی کے واقعہ کا حوالہ دے رہے تھے ۔ جیٹلی نے دعویٰ کیا کہ یو پی اے دور حکومت میں کرپشن کے واقعات میں اضافہ ہوگیا تھا کیونکہ اس وقت کے وزیراعظم منموہن سنگھ کی آواز فیصلہ سازی میں نہیں سنی جاتی تھی ۔ انہوں نے کہا کہ یو پی اے نے اس ملک کو 10سال کیلئے وزیراعظم دیا تھا لیکن اسے کوئی اختیارات نہیں دیئے تھے ‘نتیجہ یہ ہوا کہ حکومت کبھی اس موقف میں نہیں تھی کہ فیصلے کرسکے ۔ کرپشن میں اضافہ ہوتا جارہا تھا ۔ جیٹلی نے نریندر مودی زیرقیادت این ڈی اے حکومت کی ستائش کرتے ہوئے کہا کہ اس نے قومی سیاست کا دھارا تبدیل کر کے اسے کرپشن کے بجائے ترقی کی طرف موڑ دیا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ قبل ازیں کرپشن ایک عام مسئلہ تھا لیکن گذشتہ دو سال سے وزیراعظم مودی نے لفظ کرپشن ہندوستان کی ڈکشنری سے مٹا دیا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ وہ تیز رفتار فیصلے کرتے ہیں اور ان فیصلوں پر عمل آوری کی جاتی ہے ‘اس بات سے ان کی حریف بھی متفق ہے۔

TOPPOPULARRECENT