Friday , September 22 2017
Home / سیاسیات / کانگریس ۔ سی پی ایم اتحاد سے پریشانی نہیں ‘ ترنمول کا ادعا

کانگریس ۔ سی پی ایم اتحاد سے پریشانی نہیں ‘ ترنمول کا ادعا

کولکتہ 19 فبروری ( سیاست ڈاٹ کام ) مغربی بنگال میں کانگریس و بائیں بازو محاذ کے مابین اتحاد کی اطلاعات کے دوران برسر اقتدار ترنمول کانگریس نے آج کہا کہ اسے اس اتحاد سے کوئی پریشانی نہیں ہے ۔ پارٹی نے الزام عائد کیا کہ دونوں ہی جماعتوں کو ریاست کے عوام نے مسترد کردیا ہے ۔ ترنمول کانگریس کے جنرل سکریٹری سبرتا بخشی نے کہا کہ ہم کو اس اتحاد کی کوئی فکر نہیں ہے ۔ ہم صرف ریاستی حکومت کی جانب سے کئے جانے والے ترقیاتی کاموں پر توجہ مرکوز کئے ہوئے ہیں۔ جو لوگ اتحاد کرنے کی کوشش کر رہے ہیں انہیں عوام پہلے ہی مسترد کرچکے ہیں۔ مغربی بنگال کانگریس نے کل ہی سی پی ایم کے اس فیصلے کی ستائش کی تھی جس میں کہا گیا تھا کہ پارٹی تمام جمہوری طاقتوں کی تائید حاصل کریگی ۔ کانگریس کا کہنا تھا کہ ریاست میں ہر سکیولر جماعت کو عوام کی خواہشات کا احترام کرنا چاہئے ۔ ترنمول نے اسمبلی انتخابات میں ریاست میں سخت مقابلہ ہونے سے متعلق ایک سروے کو مسترد کردیا تھا اور کہا تھا کہ یہ ایک فرضی کہانی ہے جو رائے عامہ پر اثر انداز ہونے کے مقصد سے جاری کی گئی ہے ۔

 

حامد انصاری نے بجٹ سشن سے قبل راجیہ سبھا قائدین کا اجلاس
نئی دہلی 19 فروری ( سیاست ڈاٹ کام) گذشتہ دو سشنس کے عملا ہنگاموں کی نذر ہوجانے کے پیش نظر متفکر صدر نشین راجیہ سبھا حامد انصاری نے ایوان بالا میں تمام جماعتوں کے قائدین کا ایک اجلاس کل طلب کیا ہے ۔ یہ اجلاس ایسے وقت میں طلب کیا گیا ہے جب یہ اندیشے ظاہر کئے جا رہے ہیں کہ 23 فبروری سے شروع ہونے والا پارلیمانی بجٹ اجلاس بھی ہنگاموں کی نذر ہوسکتا ہے ۔ یہ شائد پہلا موقع ہے جب سشن کے آغاز سے قبل راجیہ سبھا کے صدر نشین نے اجلاس طلب کیا ہے ۔ خاص بات یہ ہے کہ وزیر اعظم نریندر مودی کو بھی کل کے اجلاس کیلئے مدعو کیا گیا ہے جس کا مقصد تین ماہ تک چلنے والے سشن کی کارروائی کو پرسکون بنانا ہے ۔

TOPPOPULARRECENT