Wednesday , August 23 2017
Home / ہندوستان / کاویری تنازعہ پر وزیر اعظم سے مداخلت کی اپیل

کاویری تنازعہ پر وزیر اعظم سے مداخلت کی اپیل

تاملناڈو اور کرناٹک کے چیف منسٹرس کا اجلاس طلب کیا جائے
بنگلورو۔/9ستمبر،( سیاست ڈاٹ کام ) دریائے کاویری سے تاملناڈو کو پانی کی سربراہی کے تنازعہ پر کرناٹک میں شدید ردعمل کے پیش نظر چیف منسٹر سدارامیا نے آج وزیر اعظم نریندر مودی سے گذارش کی ہے کہ چند گھنٹوں کی نوٹس پر دونوں ریاستوں کے چیف منسٹرس کا اجلاس طلب کریں تاکہ تاکہ جاریہ تنازعہ کا حل تلاش کیا جاسکے۔ کاویری تنازعہ پر آج ریاست میں 12گھنٹوں کے بند منانے پر سدارامیا نے نریندر مودی کو خبردار کیا کہ اگر بے چینی اور اضطراب کا سلسلہ جاری رہا تو نہ صرف ریاست کی معیشت متاثر ہوجائے گی بلکہ انفارمیشن ٹکنالوجی سے وابستہ معاشی سرگرمیاں درہم برہم ہوجائیں گی جس کے ذریعہ ملک کو زبردست آمدنی اور بیرونی زرمبادلہ حاصل ہوتا ہے۔ وزیر اعظم کو موسومہ ایک مکتوب میں چیف منسٹر نے کہا کہ وفاقی نظام کے سربراہ کی حیثیت سے فی الفور دونوں ریاستوں( کرناٹک ۔ تلنگانہ ) کے چیف منسٹرس کا اجلاس طلب کریں۔ واضح رہے کہ سپریم کورٹ احکامات کی پابندی کرتے ہوئے حکومت کرناٹک منگل سے ٹاملناڈو کیلئے 15ہزار کیوزک پانی سربراہ کررہی ہے جس کے خلاف کاویری طاس کے اضلاع بالخصوص منڈیہ میں زبردست احتجاجی مظاہرے اور بند منایا جارہا ہے کیونکہ یومیہ 15ہزار کیوزک پانی کی اجرائی سے نہ صرف بنگلورو شہر میں پینے کے پانی کی قلت پیدا ہوجائیگی بلکہ کاویری کے قرب و جوار کے کھیتوں میں فصلیں خشک ہوجائیں گی۔

TOPPOPULARRECENT