Sunday , October 22 2017
Home / مذہبی صفحہ / کتب سابقہ میں حضور اکرم صلی اللہ علیہ وسلم کا تذکرہ

کتب سابقہ میں حضور اکرم صلی اللہ علیہ وسلم کا تذکرہ

حبیب سہیل بن سعید

موجودہ تورات میں بھی تاجدار کائنات صلی اللہ علیہ وسلم کی بعثت کے متعلق بشارتیں موجود ہیں: ’’خداوند تیرا خدا تیرے لئے تیرے ہی درمیان سے یعنی میرے ہی بھائیوں میں سے میری مانند ایک نبی برپا کرے گا، تم اس کی سننا۔ میں ان کے لئے ان ہی کے بھائیوں میں سے تیری مانند ایک نبی برپا کروں گا اور اپنا کلام اس کے منہ میں ڈالوں گا اور جو کچھ میں اسے حکم دوں گا وہی وہ ان سے کہے گا۔ جو کوئی میری ان باتوں کو جن کو وہ میرا نام لے کر کہے گا، نہ سنے گا تو میں ان کا حساب اس سے لوں گا‘‘۔ (تورات استثناء، باب۱۸، آیات ۱۵تا۱۹)
مذکورہ باب کی تائید قرآن مجید کی اس آیت سے ہوتی ہے: ’’بے شک اللہ تعالی نے ایمان والوں پر بڑا احسان فرمایا کہ ان میں ان ہی میں سے (عظمت والا) رسول (صلی اللہ علیہ وسلم) بھیجا، جو ان پر اس کی آیتیں پڑھتا ہے‘‘۔ (سورۂ آل عمران۔۱۶۴)

’’دیکھو! میرا خادم جس کو میں سنبھالتا ہوں، میرا برگزیدہ جس سے میرا دل خوش ہے، میں نے اپنی روح اس پر ڈالی۔ وہ قوموں میں عدالت جاری کرے گا، وہ نہ چلائے گا، نہ شور کرے گا اور نہ بازاروں میں اس کی آواز سنائی دے گی۔ وہ مسلے ہوئے سرکنڈے کو نہ توڑے گا اور نہ ٹمٹماتی بتی کو بجھائے گا۔ وہ راستی سے عدالت کرے گا۔ وہ ماند نہ ہوگا اور ہمت نہ ہارے گا، جب تک کہ عدالت کو زمین پر قائم نہ کرے۔ جزیرے اس کی شریعت کا انتظار کریں گے۔ جس نے آسمان کو پیدا کیا اور تان دیا، جس نے زمین کو اور ان کو جو اس میں سے نکلتے ہیں پھیلادیا۔ جو اس کے باشندوں کو سانس اور اس پر چلنے والوں کو روح عنایت کرتا ہے، یعنی خداوند یوں فرماتا ہے: میں (خداوند) نے تجھے صداقت سے بلایا، میں ہی تیرا ہاتھ پکڑوں گا اور تیری حفاظت کروں گا اور لوگوں کے عہد اور قوموں کے نور کے لئے تجھے دوں گا۔ تو اندھوں کی آنکھیں کھولے اور اسیروں کو قید سے نکالے اور ان کو جو اندھیرے میں بیٹھے ہیں قید خانہ سے چھڑائے۔ یہوداہ میں ہوں، یہی میرا نام ہے، میں اپنا جلال کسی دوسرے کے لئے اور اپنی حمد کھودی ہوئی مورتیوں کے لئے روا، نہ رکھوں گا۔ دیکھو پرانی باتیں پوری ہو گئیں اور نئی باتیں بتاتا ہوں، اس سے پیشتر کہ واقع ہوں، میں تم سے بیان کرتا ہوں‘‘۔ (تورات، سعیاہ، باب۴۲، آیات ۱تا۹)

اس اقتباس کی آیت نمبر۲ میں ہے: ’’وہ نہ چلائے گا اور نہ شور کرے گا اور نہ بازاروں میں اس کی آواز سنائی دے گی‘‘۔ اس آیت میں حضور صلی اللہ علیہ وسلم کے بارے میں پیش گوئی ہے، جو کہ حضرت عمرو بن العاص رضی اللہ تعالی عنہ کی روایت میں گزر چکی ہے کہ ’’تورات میں آپﷺ کی یہ صفات لکھی ہوئی ہیں‘‘۔ (صحیح بخاری)
اس باب کی آیت نمبر۶ میں ہے: ’’میں ہی تیرا ہاتھ پکڑوں گا اور تیری حفاظت کروں گا‘‘۔ اس کی تائید قرآن مجید کی اس آیت سے ہوتی ہے: ’’اور اللہ آپ کی لوگوں سے حفاظت کرے گا‘‘ (سورۃ المائدہ۔۶۷) مزید اس باب کی آیت۷ میں ہے کہ ’’تو اندھوں کی آنکھیں کھولے اور اسیروں کو قید سے نکالے اور ان کو جو اندھیرے میں بیٹھے ہیں قید خانہ سے چھڑائے‘‘۔ اس میں بھی حضور صلی اللہ علیہ وسلم کے متعلق پیش گوئی ہے اور اس کی تصدیق یوں ہے: ’’بے شک تمہارے پاس اللہ کی طرف سے نور آگیا اور کتاب مبین، اللہ اس کے ذریعہ ان لوگوں کو سلامتی کے راستوں پر لاتا ہے، جو اس کی رضا کے طالب ہیں اور اپنے اذن سے ان کو اندھیروں سے نور کی طرف لاتا ہے اور ان کو سیدھے راستے کی طرف لاتا ہے‘‘۔ (سورۃ المائدہ۔۱۵،۱۶)

حضرت عمرو بن العاص رضی اللہ تعالی عنہ کی روایت میں حضور اکرم صلی اللہ علیہ وسلم کی صفت مذکور ہے کہ ’’اور اللہ اس وقت تک آپ کی روح ہرگز قبض نہیں کرے گا، حتی کہ آپ کے سبب سے ٹیڑھی قوم کو سیدھا کردے گا۔ بایں طور کہ وہ کہیں گے لَاالہ الّااللّٰہ اور آپﷺ کے سبب سے اندھی آنکھوں، بہرے کانوں اور پردہ پڑے ہوئے دلوں کو کھول دے گا‘‘۔ (صحیح بخاری، حدیث ۲۱۲۵)
موجودہ انجیل کے متن میں حضور اکرم صلی اللہ علیہ وسلم کے متعلق بشارتیں ہیں، چنانچہ ایک مقام پر ہے: ’’یسوع نے ان سے کہا تم نے کتاب مقدس میں کبھی نہیں پڑھا کہ جس پتھر کے معماروں نے رد کیا، وہی کونے کے سرے کا پتھر ہو گیا۔ یہ خداوند کی طرف سے ہوا اور ہماری نظر میں عجیب ہے؟۔ اس لئے میں تم سے کہتا ہوں کہ خدا کی بادشاہی تم سے لی جائے گی اور اس قوم کو جو اس کے پھل لائے، دے دی جائے گی‘‘۔ (متی کی انجیل، باب۲۱، آیات ۴۲،۴۳)
اس آیت میں بھی حضور نبی کریم صلی اللہ علیہ وسلم کی بشارت ہے اور قرآن پاک کی اس آیت کے مطابق ہے: ’’یہ وہی لوگ ہیں، جن کو ہم نے کتاب اور حکم شریعت اور نبوت عطا کی ہے۔ پس اگر ان چیزوں کے ساتھ یہ لوگ کفر کریں تو بے شک ہم نے ان چیزوں پر ایسی قوم کو مقرر فرمادیا ہے، جو ان سے انکار کرنے والے نہیں ہیں‘‘۔ (سورۃ الانعام۔۸۹)                           (جاری ہے)

TOPPOPULARRECENT