Friday , March 31 2017
Home / کھیل کی خبریں / کرائسٹ چرچ ٹسٹ معمول کے مطابق کھیلا جائے گا، حکام کا ادعا

کرائسٹ چرچ ٹسٹ معمول کے مطابق کھیلا جائے گا، حکام کا ادعا

کراچی ، 15 نومبر (سیاست ڈاٹ کام) پاکستان اور نیوزی لینڈ کے درمیان دو ٹسٹ میچوں کی سیریز کا پہلا ٹسٹ جمعرات سے کرائسٹ چرچ کے ہیگلے اوول میں شروع ہورہا ہے۔ کرائسٹ چرچ میں اتوار کی شب شدید زلزلہ آیا تھا۔ تاہم نیوزی لینڈ کرکٹ بورڈ کے حکام کا کہنا ہے کہ پہلا ٹسٹ میچ معمول کے مطابق کھیلا جائے گا۔ پاکستانی ٹیم ویسٹ انڈیز کے خلاف تین ٹسٹ میچوں کی سیریز جیتنے کے بعد نیوزی لینڈ پہنچی ہے لیکن اس جیتی ہوئی سیریز کا اختتام شارجہ ٹسٹ کی شکست کی صورت میں ہوا تھا۔ کپتان مصباح الحق کا کہنا ہے کہ پاکستانی ٹیم میں بھرپور صلاحیت موجود ہے کہ وہ نیوزی لینڈ میں اچھی کارکردگی کا مظاہرہ کرسکے۔ یہ مصباح الحق کا بحیثیت کپتان 50 واں ٹسٹ میچ ہوگا۔ وہ پچاس یا زائد ٹسٹ میچوں میں قیادت کرنے والے دنیا کے سولہویں کپتان ہوں گے۔ پاکستانی ٹیم 1984ء کے بعد سے نیوزی لینڈ کے خلاف کبھی بھی ٹسٹ سیریز نہیں ہاری ہے لیکن نیوزی لینڈ کے خلاف اس کی آخری ٹسٹ سیریز جو گزشتہ سال متحدہ عرب امارات میں کھیلی گئی تھی اس کیلئے بڑا جھٹکہ ثابت ہوئی تھی جس میں نیوزی لینڈ نے شارجہ ٹسٹ اننگز اور 80 رنز سے جیت کر سیریز برابر کردی تھی۔ نیوزی لینڈ کی ٹیم انڈیا میں 3-0 سے ٹسٹ سیریز ہارنے کے بعد اپنا کھویا اعتماد ہوم گراؤنڈ پر بحال کرنے کی کوشش کرے گی۔ نیوزی لینڈ کی ٹیم کا اپنے ہوم گراؤنڈ پر ریکارڈ اچھا رہا ہے۔ گزشتہ پانچ سال کے دوران وہ صرف آسٹریلیا کے خلاف ٹسٹ سیریز ہاری ہے۔ اس عرصے میں اس نے ویسٹ انڈیز، انڈیا اور سری لنکا کے خلاف ٹسٹ سیریز جیتی ہیں جبکہ پاکستان اور انگلینڈ سے سیریز برابر رہی ہیں۔ نیوزی لینڈ کے کوچ مائیک ہیسن کو امید ہے کہ ان کی ٹیم وطن کے مانوس حالات سے بھرپور فائدہ اٹھائے گی۔ ہیگلے اوول کی وکٹ کے بارے میں ان کا کہنا ہے کہ اس میں باؤنس بھی ہے اور وہ تیز ہے۔مائیک ہیسن کا کہنا ہے کہ پاکستانی بولنگ اٹیک بہت ہی متوازن ہے جو نئی گیند کے ساتھ بھی سوئنگ کرسکتا ہے

 

اور اس میں ریورس سوئنگ کی صلاحیت بھی ہے جبکہ اس کے پاس ایک اچھا اسپنر بھی موجود ہے۔ پاکستانی ٹیم کے بارے میں توقع یہی ہے کہ وہ چھ اسپیشلسٹ بیٹسمنوں اور چار بولرز کے ساتھ میدان میں اترے گی۔ اس صورت میں بابراعظم کو ایک بار پھر ٹیم میں جگہ بنانے کا موقع مل جائے گا جنھوں نے دبئی میں اپنے پہلے ٹسٹ میچ میں نصف سنچری بنائی تھی لیکن اگلے دو ٹسٹ میچوں میں ٹیم میں جگہ بنانے میں کامیاب نہیں ہوسکے تھے۔ نیوزی لینڈ میں وکٹیں عام طور پر سیم بولرز کو مدد دیتی ہیں اور دونوں ٹیمیں ان حالات میں اپنے تیز بولرز پر انحصار کریں گی۔ پاکستانی پیس اٹیک میں وہاب ریاض، محمد عامر اور سہیل خان کی شمولیت متوقع ہے۔ ہیگلے اوول میں اب تک صرف دو ٹسٹ میچز کھیلے جاچکے ہیں۔ دوسال قبل نیوزی لینڈ نے اس میدان میں سری لنکا کو آٹھ وکٹوں سے شکست دی تھی لیکن اس سال اسے آسٹریلیا کے ہاتھوں سات وکٹوں سے شکست کا سامنا کرنا پڑا ہے۔ یہ وہی میدان ہے جہاں پاکستان نے گزشتہ سال ورلڈ کپ میں ویسٹ انڈیز کے خلاف میچ کھیلا تھا جس میں اسے ایک سو پچاس رنز سے شکست ہوئی تھی۔

Leave a Reply

TOPPOPULARRECENT