Monday , August 21 2017
Home / Top Stories / کرنسی مسئلہ ایوان میں وزیر اعظم کی موجودگی پر اپوزیشن کا اصرار

کرنسی مسئلہ ایوان میں وزیر اعظم کی موجودگی پر اپوزیشن کا اصرار

ہم وہی کر رہے ہیں جو 2013 کےٹو جی  اسکام میں بی جے پی نے کیا تھا ۔ کانگریس ترجمان جئے رام رمیش کی وضاحت

نئی دہلی 24 نومبر ( سیاست ڈاٹ کام ) کانگریس نے آج اپنے اس موقف کا اعادہ کیا کہ بڑے کرنسی نوٹوں کو بند کرنے کے مسئلہ پر راجیہ سبھا میں مباحث کی وزیر اعظم خود سماعت کریں اور وہی ان مباحث کا جواب دیں۔ راجیہ سبھا میں اس مئسلہ پر کچھ مسائل آج اٹھائے گئے تھے ۔ کانگریس نے کہا کہ پارٹی اسی راستہ پر عمل کر رہی ہے جب بی جے پی نے 2G اسپیکٹرم اسکام مسئلہ پر اختیار کیا تھا ۔ یہ اسکام 2013 میں ہوا تھا اور بی جے پی اس وقت اپوزیشن میں تھی ۔ کانگریس ترجمان جئے رام رمیش نے کہا کہ جس طرح سے بی جے پی نے اگسٹ 2013 میں وزیر اعظم کی راجیہ سبھا میں موجودگی کا مطالبہ کیا تھا اسی طرح کانگریس پارٹی کو بھی ایسا کرنے کا پورا حق حاصل ہے ۔ انہوں نے کہا کہ جو اصول بی جے پی نے 2013 میں اختیار کیا تھا اور مطالبہ کیا تھا کہ اس پر وزیر اعظم وضاحت کریں وہی اصول اب کانگریس پارٹی اختیار کر رہی ہے ۔ انہوں نے کہا کہ ہم بھی یہی مطالبہ کر رہے ہیں کہ وزیر اعظم نریندرمودی اپوزیشن کی جانب سے اٹھائے جانے والے سوالات کی وضاحت کریں۔ انہوں نے کہا کہ سابق وزیر اعظم ڈاکٹر منموہن سنگھ نے ایوان میں کسانوں اور غیرمنظم شعبہ کے افراد کی نمائندگی کرتے ہوئے اپنے وسیع تجربہ کے مطابق اظہار خیال کیا ہے ۔ منموہن سنگھ نے اس مسئلہ پر ایوان میں مباحث کا آغاز کرتے ہوئے حکومت کو سخت تنقید کا نشانہ بنایا تھا ۔

جئے رام رمیش نے کہا کہ ڈاکٹر منموہن سنگھ کو عوامی زندگی کا وسیع تجربہ حاصل ہے اور انہوں نے حکومت میں کئی عہدوں پر خدمات انجام دی ہیں۔ انہوں نے اپنے الفاظ کا بہترین استعمال کیا ہے اور انہوں نے صرف ڈرامائی انداز اختیار نہیںکیا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ ڈاکٹر سنگھ نے اپنے الفاظ کا صحیح استعمال کیا ہے اور ڈرامائی انداز سے گریز کیا ہے ۔ وزیر اعظم کو چاہئے کہ وہ اپنے پیشرو کے خیالات کی سماعت کریں۔ ہم چاہتے ہیں کہ وزیر اعظم اپنے موقف کی وضاحت کریں۔ کانگریس لیڈر نے کہا کہ ڈاکٹر منموہن سنگھ نے اپنی تقریر میں خبردار کیا ہے کہ حکومت کے اس فیصلے کے نتیجہ میں جملہ گھریلو پیداوار دو فیصد تک گھٹ جائیگی ۔ انہوں نے کہا کہ ماہرین کو یہ اندیشے لاحق ہیں کہ جملہ گھریلو پیداوار اس سال صرف پانچ فیصد تک ہو کر رہ جائیگی ۔ انہوں نے کہا کہ چونکہ بڑے کرنسی نوٹوں کا چلن بند کرنے کا فیصلہ وزیر اعظم نے کیا تھا اور وہی اس کی وکالت بھی کر رہے ہیں ایسے میں اپوزیشن جماعتیں مطالبہ کرتی ہیں کہ وہ مباحث کے وقت ایوان میں موجود رہیں۔ ساری اپوزیشن جماعتیں اس مطالبہ پر متحد ہیں کہ وزیر اعظم کو ایوان میں موجود رہنا چاہئے اور تمام جماعتوں کے خیالات کی سماعت کرنا چاہئے تاکہ وہ ان کی وضاحت کرسکیں۔ اپوزیشن جماعتیں مسلسل یہ کہتی آ رہی ہیں کہ اگر ایوان میں وزیر اعظم نہیں آئیں گے تو مباحث نہیں ہونگے ۔ انہوں نے کہا کہ اپوزیشن جماعتوں کو ایوان میں وزیر اعظم کی موجودگی کا مطالبہ کرنے کا پورا حق حاصل ہے ۔ انہوں نے کہا کہ یہ فیصلہ محض ایک شخص ( مودی ) نے کیا ہے اور اس پر وہی عمل کر رہے ہیں ۔ وہی خود کو مبارکباد دے رہے ہیں۔ یہ زیادہ سے زیادہ تشہیر کیلئے ایک شخص کی خواہش ہی ہے ۔ اقل ترین حکومت ‘ اعظم ترین حکمرانی کا نعرہ اب اقل ترین حکمرانی اور اعظم ترین تشہیر میں بدل گیا ہے ۔ ہم چاہتے ہیں کہ وزیرا عظم مباحث کے دوران ایوان میں موجود رہیں۔ انہوں نے کہا کہ کانگریس اس مسئلہ پر مباحث چاہتی ہے لیکن بی جے پی اور وزیر اعظم مودی اس سے فرار اختیار کر رہے ہیں۔

TOPPOPULARRECENT