Friday , July 21 2017
Home / شہر کی خبریں / کرنسی نوٹوں کی تبدیلی، مودی سرکار کا نادانی میں کیا گیا فیصلہ

کرنسی نوٹوں کی تبدیلی، مودی سرکار کا نادانی میں کیا گیا فیصلہ

مالیاتی دہشت گردی، ساری قوم مصیبت کا شکار، ایس کے افضل الدین کا بیان

حیدرآباد 13 نومبر (پریس نوٹ) جنرل سکریٹری تلنگانہ پردیش کانگریس کمیٹی جناب ایس کے افضل الدین نے مودی سرکار کی جانب سے کسی منصوبہ کے بغیر پانچ سو اور ایک ہزار روپئے کی کرنسی نوٹوں کی منسوخی کو مخالف عوام اور مخالف ملک اقدام قرار دیا اور کہاکہ یہ بات قوم کے مفاد میں ہے کہ اس فیصلہ کو جتنا جلد ہوسکے واپس لیا جائے۔ اس فیصلہ سے صرف اور صرف غریب عوام متاثر ہوئے ہیں اور یہ بی جے پی کی ناقص حکمرانی کا ناقابل تردید ثبوت ہے۔ وزیراعظم مودی نے اچانک یہ اعلان اس انداز میں کیاکہ جیسے کسی ملک پر دشمن کا قبضہ ہوگیا ہو اور وہ اس ملک کی کرنسی کو یک لخت منسوخ کردے۔ مودی کا یہ اعلان مالیاتی دہشت گردی ہے۔ انھوں نے بڑے نوٹوں کو منسوخ کرتے ہوئے ملک کے 90 فیصد سے زیادہ عوام کو مصیبت میں مبتلا کردیا ہے۔ مودی کی نادانی کی اس سے بڑی مثال اور کیا ہوسکتی ہے کہ بازار میں پہلے سے ہی ایک روپئے اور اس سے چھوٹی نوٹوں کی قلت ہے، حتیٰ کہ بینکوں میں بھی چھوٹے نوٹ نہیں ہیں۔ بڑی نوٹوں کی مالیت کی جتنی مقدار ہے اس کو منسوخ کرنے سے پہلے یہ اطمینان نہیں کیا گیا کہ اتنی مقدار میں چھوٹے نوٹ بھی موجود ہیں یا نہیں۔ یہ بات کتنے افسوس اور شرم کی ہے کہ غریب لوگوں کو دن بھر کی مزدوری سے محروم کرتے ہوئے اپنی ہی محنت کی کمائی کی معمولی رقم حاصل کرنے کے لئے دن دن بھر قطار میں کھڑے رہنے پر مجبور کردیا گیا ہے اور بڑی بدبختی کی بات ہے کہ اتنا انتظار کرنے کے باوجود کئی لوگ کرنسی نوٹ کو تبدیل کروانے سے محروم رہتے ہیں۔ جناب ایس کے افضل الدین نے مزید کہاکہ کالے دھن کی مکھی کو قوم کی ناک پر سے اُڑانے کی کوشش کرتے ہوئے مودی سرکار نے ساری قوم کو لہو لہان کردیا ہے۔ جناب ایس کے افضل الدین نے کہاکہ بی جے پی کے برسر اقتدار آنے کے بعد سے عوام کے مفاد میں کوئی فیصلہ نہیں کیا گیا۔ صرف فرقہ پرستی کا زہر پھیلاتے ہوئے مسلمانوں اور دلتوں کو ہراساں کیا جارہا ہے۔ کرنسی نوٹ کی تبدیلی سے عوام کی کمر ٹوٹ گئی ہے اور معیشت تباہ و برباد ہوگئی ہے۔ حالات دھماکو ہوتے جارہے ہیں۔ افواہوں نے عوام کا جینا دوبھر کردیا ہے۔ اس لئے ضروری ہے کہ یا تو اس فیصلہ کو واپس لیا جائے یا پھر عوام کو نوٹوں کی تبدیلی کی مہلت میں مزید توسیع  دی جائے۔

Leave a Reply

TOPPOPULARRECENT