Thursday , June 29 2017
Home / ہندوستان / کرنسی نوٹوں کی منسوخی پر تنقیدوں سے اپوزیشن بے نقاب

کرنسی نوٹوں کی منسوخی پر تنقیدوں سے اپوزیشن بے نقاب

وزیراعظم کے ایک جھٹکے سے بلیک منی ڈھیر، صدر بی جے پی امیت شاہ کا دعوی
اعظم گڑھ۔17 نومبر (سیاست ڈاٹ کام) کرنسی نوٹوں کی منسوخی کے لئے حکومت کے فیصلہ پر تنقیدوں کو مسترد کرتے ہوئے بی جے پی صدر امیت شاہ نے آج کہا کہ اپوزیشن جماعتوں نے اپنے آٖ کو بے نقاب کرلیا ہے اور جو لوگ پاکدامن ہیں وہ ہرگز اس فیصلے کی مخالفت نہیں کریں گے۔ بی جے پی قائدین کرنسی نوٹوں کی منسوخی کے اقدام سے فکرمند نہیں ہیں اور صرف بلیک منی رکھنے والے ہی پریشان نظر آتے ہیں۔ اگر اپوزیشن کا دامن پاک و صاف ہے تو اس اقدام کی مخالفت کیوں کررہے ہیں۔ سماج وادی پارٹی سربراہ ملائم سنگھ یادو کے حلقہ لوک سبھا میں بی جے پی پریورتن ریالی سے مخاطب کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ کرنسی نوٹوں کی منسوخی پر مایاوتی، کانگریس، سماجوادی پارٹی، ممتا بنرجی، کمیونسٹ واویلا مچارہے ہیں امیت شاہ نے سوال کیا کہ اگر تم لوگ (باپوزیشن) دودھ کے دھلے ہوئے ہیں تو عوام کے سامنے کیوں شور و غوغہکررہے ہو… کیوں اپنے آپ کو بے نقاب کررہے ہو۔ صدر بی جے پی نے اپنے طنزیہ انداز میں کہا کہ اکھلیش بھائی (چیف منسٹر اترپردیش اکھلیش یادو) تمہیں کس بات کی پریشانی ہے… ہمارے پاس کوئی بلیک منی نہیں ہے تو نوٹوں کی منسوخی کے فیصلہ سے دستبرداری کا سوال ہی نہیں پیدا ہوتا۔ صرف ایک ہی جھٹکے میں وزیراعظم نریندر مودی نے 500 اور 1000 روپئے کے نوٹوں کو ناکارہ بنادیا ہے۔ انہوں نے یہ دعوی کیا کہ دہشت گردوں، منشیات کے اسمگلروں، نکلائٹس اور بلیک مارکٹنگ کرنے والوں کے پاس رکھی ہوئی ناجائز دولت ناقابل استعمال ہوگئی ہے۔ گوکہ عوام طویل قطاروں میں کھڑے ہیں جس کا احساس ہمیں بھی ہے لیکن جب کوئی بڑا فیصلہ کیا جاتا ہے تو بعض مسائل پیدا ہوجاتے ہیں تاہم بعض لوگوں کے لئے خوشی کی نوید لاتی ہے۔ انہوں نے بتایا کہ حکومت کے انقلابی اقدام سے افراط زر، کالا بازاری، پاکستان سے جعلی نوٹوں کی سربراہی پر قابو پایا جاسکتا ہے۔ نوٹوں کی منسوخی سے شادی بیاہ کی تقاریب اور تخم ریزی کی تیاریوں میں مصروف عوام کو دشواریوں کے پیش نظر وزیراعظم نے آج شادیوں کے لئے 2.5 لاکھ روپئے اور کسانوں کے لئے 50 ہزار روپئے بینکوں سے نکالنے کی اجازت دے دی ہے جبکہ کسان کریڈٹ کارڈ رکھنے والے ہر ہفتہ 25 ہزار روپئے حاصل کرسکتے ہیں۔ صدر بی جے پی نے کہا کہ اترپردیش میں ایک ایسی حکومت کی ضرورت ہے جو کہ ریاست کو خوشحال بناسکے چوں کہ سماج وادی پارٹی اور بہوجن سماج پارٹی یہ کام نہیں کرسکتی۔ لہٰذا بی جے پی کو یہ ذمہ داری تفویض کرنے کی ضرورت ہے۔

Leave a Reply

TOPPOPULARRECENT