Saturday , October 21 2017
Home / کھیل کی خبریں / کرکٹ شاٹس پر سرفراز کا کنٹرول حیران کن ، واٹسن کا اظہار ستائش

کرکٹ شاٹس پر سرفراز کا کنٹرول حیران کن ، واٹسن کا اظہار ستائش

آخری اوورس میں سرفراز کی جارحیت نے میچ آر سی بی کے حق میں کردیا ، حریف کپتان وارنر کا تاثر

بنگلورو ۔ 13 اپریل ۔ ( سیاست ڈاٹ کام ) ہندوستان کے تیزی سے اُبھرتے بیٹسمین سرفراز خان کے لئے گزشتہ روز سن رائیزرس حیدرآباد کے خلاف جارحانہ کھیل یادگار ہوگیا کیونکہ نہ صرف اُنھیں محض 10 گیندوں میں 35 رنز بنانے سے نیا حوصلہ ملا بلکہ اُنھیں آسٹریلیا کے مایہ ناز کرکٹرس شین واٹسن اور ڈیوڈ وارنر نیز ویسٹ انڈیز کے اسٹار اوپنر کرس گیل کی طرف سے زبردست تعریف و ستائش بھی حاصل ہوئی ۔ واٹسن خود سرفراز کی ٹیم رائل چیلنجرس بنگلور کے ساتھی ہیں جبکہ وارنر حریف کپتان ہیں ۔ میچ کے بعد جس میں آر سی بی نے ویراٹ کوہلی کی قیادت میں شاندار کامیابی درج کرائی ، واٹسن نے بالخصوص سرفراز کے شاٹس پر اُن کے کنٹرول کو سراہا ۔ انھوں نے پریس کانفرنس میں میڈیا کو بتایا کہ سرفراز غیرمعمولی نوجوان کھلاڑی ہے اور اس میں کوئی شبہ نہیں کہ وہ تمام قسم کے شاٹس کو درست انداز میں کھیلنے کیلئے کافی محنت کرتا آیا ہے جس کے نتائج ہمارے سامنے ہیں۔ شاٹس پر جس طریقہ کا کنٹرول حیدرآباد ٹیم کے خلاف دیکھنے میں آیا اُس طرح کی صلاحیت کسی نوجوان کھلاڑی میں بہت کم دیکھی گئی ہے ۔ اس سے پتہ چلتا ہے کہ اُنھوں نے بہت مشق کر رکھی ہے جس کا ہمیں نظارہ ہوا ۔ واٹسن نے اے بی ڈی ویلیرس کی بیٹنگ کی بھی ستائش کی ۔ جنوبی افریقی بیٹسمین نے حیدرآباد کے بولروں کو میدان کے چاروں طرف پیٹا اور 82 رنز کی اننگز میں 7 چوکے اور 6 چھکے لگائے ۔ واٹسن نے یہ بھی کہا کہ جس انداز میں کوہلی (75) اور اے بی نے 157 رنز کی غیرمعمولی پارٹنرشپ نبھائی ، اُس کے دوران مجھے ایسا لگ رہا تھا کہ میری بیٹنگ کا موقع نہیں آئے گا تاہم مجموعی طورپر سرفراز کی اننگز نے ٹیم کو 227/4 کے ہمالیائی اسکور تک پہونچانے میں اہم رول ادا کیا

جس کے بعد ہماری کامیابی لگ بھگ یقینی ہوگئی ۔ گیل نے جو کل صرف ایک رن بناسکے ، میچ کے بعد اپنے تاثرات میں کہاکہ ٹیم کے نقطہ نظر سے یہ مقابلہ بہت اچھا رہا ، جس میں منجھے ہوئے بیٹسمینوں نے تو اچھا کھیلا ہی مگر سرفراز کی اننگز مجھے بہت اچھی لگی ۔ ’’ وہ عمر کے اعتبار سے میرے لئے بیٹے کی مانند ہے ۔ اُس کی جارحانہ بلے بازی کا میں نے بہت لطف اُٹھایا ۔ یہ آر سی بی کیلئے بہت اچھی بات ہے کہ اُسے لوور آرڈر میں بھی شاندار بیٹسمین دستیاب ہے ‘‘ ۔ دریں اثناء وارنر نے 45 رنز کی ناکامی کے بعد اس کیلئے سرفراز کی جارحانہ بلے بازی کو اہم عنصر بتایا ۔ انھوں نے کہاکہ اے بی اور کوہلی کی پارٹنرشپ نے آر سی بی کو معقول اسکور ضرور فراہم کیا لیکن سرفراز کے طوفانی 35 رنز نے میچ کو ہماری گرفت سے دور کردیا۔ سرفراز نے 19 ویں اوور میں 28 رنز بٹورے ۔ اس پر وارنر نے کہا کہ وہ اپنے آپ کو بھی مورد الزام مانتے ہیں کیونکہ بھونیشور کمار کے اُس اوور میں اُنھوں نے بولر کو ایک کپتان کی حیثیت سے کچھ بھی مشورہ نہیں دیا ۔ انھوں نے کہاکہ ہمیں پہلے سے پتہ تھا کہ سرفراز اچھا کھیلتے ہیں ۔ تاہم ہماری بدقسمتی رہی کہ اُنھیں فل ٹاس گیندیں مل گئیں جس کا اُنھوں نے بھرپور فائدہ اُٹھایا ۔ ’’میں کسی کو بھی مورد الزام نھیں ٹھہرارہا ہوں ، ہم شاید کچھ مختلف گیندیں کرسکتے تھے لیکن ایسا نہیں ہوسکا ۔ مگر میں اپنی غلطی بھی تسلیم کرتا ہوں ، مجھے اُس موقع پر بولر سے بات کرنی چاہئے تھی ‘‘۔

TOPPOPULARRECENT