Wednesday , August 23 2017
Home / Top Stories / کسانوں اور طلبہ کے مسائل پر تلنگانہ کانگریس کی دستخطی مہم

کسانوں اور طلبہ کے مسائل پر تلنگانہ کانگریس کی دستخطی مہم

20 اور 21 اکٹوبر کو بالترتیب محبوب آباد اور کالجس میں آغاز، صدر پی سی سی اتم کمار ریڈی

حیدرآباد ۔ 15 اکٹوبر (سیاست نیوز) صدر تلنگانہ پردیش کانگریس کمیٹی کیپٹن اتم کمار ریڈی نے کسانوں اور طلبہ کے مسائل پر ایک ماہ طویل دستخطی مہم شروع کرنے کا اعلان کرتے ہوئے کہا کہ 20 اکٹوبر کو محبوب آباد میں ریتوگرجنا اور 21 اکٹوبر کو کالجس سے دستخطی مہم کا آغاز  کرنے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔ صدر تلنگانہ پردیش کانگریس کمیٹی نے کہا کہ حکومت کسانوں اور طلبہ سے انصاف کرنے میں پوری طرح ناکام ہوگئی ہے۔ کانگریس پارٹی طلبہ اور کسانوں سے اظہارہمدردی اور حکومت پر دباؤ ڈالنے کیلئے بڑے پیمانے پر دستخطی مہم کا آغاز کرے گی۔ کسانوں کے یکمشت قرض معاف کرنے کا وعدہ کرنے والے کے سی آر وقت پر اقساط بھی ادا نہیں کررہے ہیں جس کی وجہ سے بنکس کسانوں کو قرضہ جات جاری کرنے سے انکار کررہے ہیں۔ حکومت کے خلاف احتجاجی مہم کا آغاز کرنے کیلئے کانگریس پارٹی 20 اکٹوبر کو محبوب آباد میں ریتو گرجنا کے نام سے احتجای جلسہ عام کا اعلان کیا۔ اس جلسہ عام سے کانگریس پارٹی دستخطی مہم کا آغاز کرے گی۔ 21 اکٹوبر کو تلنگانہ کے تمام کالجس میں یوتھ کانگریس اور این ایس یو آئی کی جانب سے فیس ریمبرسمنٹ کی عدم اجرائی کے خلاف طلبہ سے دستخطوں پر مشتمل درخواستیں حاصل کریں گے۔ صدر تلنگانہ پردیش کانگریس کمیٹی نے چیف منسٹر کو جھوٹا اور وعدوں سے انحراف کرنے والا قائد قرار دیتے ہوئے کہا کہ کے سی آر نے 40 لاکھ کسانوں کے یکشمت قرض معاف کرنے کا وعدہ کیا تھا۔ تاہم ابھی تک قرض ادائیگی کے صرف دو اقساط ادا کئے گئے ہیں۔ اسمبلی میں وعدے کرنے کے باوجود چیف منسٹر نے بینکوں کو قرض کے اقساط جاری نہیں کئے۔ 37 لاکھ کسانوں نے اپنے پاس بکس اور 3.5 لاکھ خواتین نے اپنے زیورات بینکوں میں رکھا ہے۔ بنکوں کی جانب سے قرض کی عدم اجرائی پر کسان دوبارہ پروائیٹ منی لینڈرس سے رجوع ہورہے ہیں۔ قرضوں کے بوجھ کے باعث 4.5 ہزار کسانوں نے خودکشی کرلی ہے۔ کیپٹن اتم کمار ریڈی نے کہاکہ کانگریس حکومت نے غریب طلبہ کو اعلیٰ تعلیمی مواقع فراہم کرنے کے مقصد سے سال 2008ء میں فیس ریمبرسمنٹ اسکیم کا آغاز کیا اور اس کو کامیاب بھی قرار دیا تھا۔ تاہم ٹی آر ایس گذشتہ دو سال سے 2140 کروڑ روپئے کے بقایا جات ہنوز جاری نہیں کئے۔ فیس ریمبرسمنٹ کی عدم اجرائی سے کالجس طلبہ اور ان کے سرپرست پریشان حال ہیں۔ ریاست کے تمام عوام سے اس تحریک میں حصہ لینے کی اپیل کی ہے۔

TOPPOPULARRECENT