Tuesday , October 17 2017
Home / اضلاع کی خبریں / کسانوں کو گمراہ کرنے کے خلاف قانونی کارروائی کا انتباہ

کسانوں کو گمراہ کرنے کے خلاف قانونی کارروائی کا انتباہ

عادل آباد /21 اکٹوبر ( سیاست ڈسٹرکٹ نیوز ) تلنگانہ پردیش کانگریس کمیٹی صدر مسٹر اتم کمار ریڈی و مسٹر جانا ریڈی کی جانب سے کسانوں کو گمراہ کرتے ہوئے اقدام خودکشی پر مجبور کرانے کے الزام میں قانونی کارروائی کرنے کا انتباہ ریاستی وزیر مسٹر جوگو رامنا نے مستقر عادل آباد کے فارسٹ گیسٹ ہاوز میں منعقدہ میڈیا سے مخاطب کے دوران دیا ۔ موصوف نے اس موقع پر تلگودیشم کے مسٹر دیاکر راؤ اور بی جے پی کے مسٹر کشن ریڈی پر بھی الزام عائد کیا کہ وہ ریاست کے مختلف مقامات پر عوامی خطاب کے ذریعہ زراعت پیشہ افراد کو ورغلا رہے ہیں ۔ مسٹر جوگو رامنا نے اس موقع پر اپنے خطاب کے دوران کسانوں کو خودکشی جیسے اقدام کرنے سے گریز کرنے کا مشورہ دیا اور انہیں تیقن دیا کہ ریاستی حکومت زراعت پیشہ افراد کو خواطر خواہ فائدہ پہونچانے پر ممکن اقدام کر رہی ہے ۔ مرکزی حکومت کی سرپرستی میں خدمات انجام دینے والا ادارہ کاٹن کارپوریشن آف انڈیا CCI کی جانب سے کاٹن کو خواطر خواہ قیمت ادا کرنے سے خاصر ہے جس کے بناء پر صنعت کاروں سے گفت شنید کرتے ہوئے کاٹن تجارت کو ترجیحی دی جارہی ہے ۔ وزیر اعظم مسٹر نریندر مودی نے انتخابی منشور کے علاوہ اپنے خطابات کے دوران سوامی ناتھ کمیشن کی ہدایت کے تحت کپاس کو خریدنے کا تیقن دیا تھا ۔ ریاستی وزیر نے کہا کہ نیم سرکاری ادارے جن میں مارکفیڈ اورنافیڈ کو کاٹن تجارت میں حصہ لینے کی خواہش کی گئی ہے ۔ جس کے تحت کپاس کی قیمت میں مزید اضافہ ہونے کے احامات میں پرہجوم میڈیا سے مخاطب کے موقع پر مسٹر دامودھر ریڈی ، ٹاون کمیٹی صدر مسٹر سید ساجد الدین ، سراج قادری ، میناریٹی صدر محمد ظہورالدین ، عروج خان ایڈوکیٹ ، ظہیر رمضانی کے علاوہ دیگر قائدین بھی موجود تھے ۔ مسٹر جوگو رامنا اپنا تسلسل برقرار رکھتے ہوئے کانگریس اور تلگودیشم پر الزام عائد کیا کہ 1998 سے 2014 تک 429 خودکشی کرنے والے کسانوں کو امداد پہونچائی گئی تھی ۔ جبکہ ٹی ار ایس حکومت کے ایک سال میں 69 کے منجملہ 21 کسانوں کو ایکس گریشیا ادا کیا جاچکا ہے ۔ پڑوسی ریاست مہاراشٹرا میں بی جے پی حکومت کے باوجود تاہم کپاس تجارت کا آغاز نہ کیا گیا جس پر اظہار تشویش کریت ہوئے ریاستی وزیر نے کہا کہ ضلع کے فصلوں سے متاثرہ 22 منڈل جات کا پروفیسر شنکر اچاریہ بغور جائزہ لے رہے ہیں ۔ ان کی پیش کردہ رپورٹ کے تحت ضلع کو خشک سالی سے متاثرہ ضلع قرار دیکر کسانوں کو حکومت کی جانب سے امداد پہونچائی گئی ۔ اس موقع پر مسٹر جوگو رامنا نے دیگر جماعتوں کے سیاسی قائدین کی بیان بازی پر توجہ نہ دینے کسانوں کو مشورہ دیا ۔

TOPPOPULARRECENT