Wednesday , August 23 2017
Home / اضلاع کی خبریں / کسانوں کی خودکشی واقعات کو روکنے میں حکومت ناکام

کسانوں کی خودکشی واقعات کو روکنے میں حکومت ناکام

خامیوں کو چھپانے اپوزیشن پر الزام تراشی ٹی آر ایس کا مشغلہ: جیون ریڈی

کریم نگر۔/13ستمبر،  ( سیاست ڈسٹرکٹ نیوز) ٹی آر ایس حکومت جب سے اقتدار میں آئی ہے تب سے اب تک اس کا روزانہ کا معمول بن چکا ہے کہ وہ اپنی نااہلی اور خامیوں کی پردہ پوشی کیلئے دیگر سیاسی پارٹیوں پر متواتر الزام تراشی کرتے ہوئے بیانات جاری کرتی ہے، اس کے سواء اس کے پاس عوامی بہبود کا کوئی پروگرام نہیں ہے۔ قائد مقننہ کانگریس پارٹی ٹی جیون ریڈی نے سخت کرتے ہوئے یہ بات کہی۔ کریم نگر آر اینڈبی گیسٹ ہاوز میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے انہوں نے بڑے دکھ کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ ریاست میں روزانہ اوسطاً 4کسان خودکشی کررہے ہیں لیکن حکومت ان واقعات کے انسداد کیلئے کوئی توجہ نہیں دے رہی ہے۔ اخباری اطلاعات کے مطابق 1300کسانوں نے خودکشی کی ہے جبکہ وزیر آبپاشی پوچارم سرینواس کہہ رہے ہیں کہ 421کسان ہی خودکشی کئے ہیں، پھر دوبارہ ان کا بیان آتا ہے کہ  صرف 141کسانوں نے ہی خودکشی کی ہے، اب کونسا بیان سچ اور کونسا جھوٹ ہے، کسانوں پر حکومت کی توجہ ہے کہ یا نہیں، کانگریس دور حکومت میں کسانوں کو مفت دی گئی برقی بلز معاف کئے گئے، دھان پر 50روپئے بونس دیا گیا، مئی خریدی کے مراکز کا قیام عمل میں لایا گیا۔ امدادی قیمت ادا کی گئی اور کپاس کے تخم کو بھی 1800کے بجائے 800روپئے میں فراہم کیا گیا۔ کسانوں کے قرض معاف کروائے گئے۔ انہوں نے سوال کیا کہ ٹی آر ایس حکومت نے 18ماہ میں کیا کیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ پوچارم سرینواس کیوں خاموش ہیں۔ 90فیصد کسان غریب ہیں اور قرض کے بوجھ تلے خودکشی کرنے پر مجبور ہورہے ہیں۔ دس سال قبل خودکشی کئے کسانوں کے خاندانوں کی باز آبادکاری کے لئے دیڑھ لاکھ ایک گریشیا دیا گیا تھا مارکٹ میں قیمتوں میں دس گنا اضافہ ہوچکا ہے لیکن ایکس گریشیا میں اضافہ نہیں کیا جارہا ہے جبکہ کسان دشمن کا نام رکھنے والے چندرا بابو نائیڈو آج آندھرا پردیش میں کسانوں کو پانچ لاکھ روپئے ایکس گریشیا دے رہے ہیں۔ اس اجلاس میں سابق وہپ آرے پلی موہن، ترجمان اکولا پرکاش، مستقر پارٹی صدر کرا شیکھر، پارٹی قائدین کے نریندر ریڈی، ڈی مدھو، ای کمریا، انجی سرسلہ، مہیش گوگیلا جے سری پی ستیم، ٹی بھومیا، مخدوم وغیرہ شریک تھے۔

TOPPOPULARRECENT