Saturday , August 19 2017
Home / شہر کی خبریں / کسانوں کی خود کشی ، حکومت کی جانب سے ہلاکتوں سے تعبیر

کسانوں کی خود کشی ، حکومت کی جانب سے ہلاکتوں سے تعبیر

ٹی آر ایس حکومت کے خلاف فوجداری مقدمات درج کرنے سی پی آئی قائدین کا مطالبہ
حیدرآباد ۔ 14 ۔ ستمبر : ( این ایس ایس ) : کسانوں کی خود کشی کو حکومت کی جانب سے ہلاک قرار دیتے ہوئے ٹی آر ایس حکومت کے خلاف فوجداری مقدمات درج کرنے کا مطالبہ کرتے ہوئے تلنگانہ کے سی پی آئی قائدین نے آج یہاں اسٹیٹ اگریکلچر کمشنریٹ کے سامنے ایک دھرنا دیا ۔ اس موقع پر مخاطب کرتے ہوئے سی پی آئی گریٹر حیدرآباد ساوتھ زون سکریٹری ای ٹی نرسمہا نے الزام عائد کیا کہ وزراء کسانوں کی خود کشی پر توہین آمیز انداز میں بات کررہے ہیں ۔ حیرت کی بات ہے کہ چیف منسٹر نے ایسے وقت چین کا دورہ کرنے کو ترجیح دی جب کہ ریاست میں کسان ناقابل برداشت صورتحال میں خود کشی کا ارتکاب کررہے ہیں ۔ انہوں نے یہ بھی پوچھا کہ کے چندر شیکھر راؤ کے ارکان خاندان کا یہ کہنا کہ عوام کو خود کشی کرنے والے کسانوں کے خاندانوں کو ایڈاپٹ کرنا ہوگا کہاں تک درست ہے ۔ انہوں نے کہا کہ کے سی آر ، کے ٹی آر اور کویتا کو پہلے سینکڑوں کسانوں کو ایڈاپٹ کرنا ہوگا ۔ انہوں نے یہ بھی کہا کہ کے سی آر ، جنہوں نے بونالو اور بتکماں فیسٹیولس کے لیے کروڑہا روپئے الاٹ کیے ۔ کسانوں پر توجہ دینے میں بری طرح ناکام ہوگئے ہیں ۔ یہ مطالبہ کرتے ہوئے کہ حکومت خود کشی کرنے والے کسانوں کے خاندانوں کو 10 لاکھ روپئے ایکس گریشیا دے ۔ سی پی آئی قائد نے فیملی ممبر کو ایک گورنمنٹ جاب فراہم کرنے کا مطالبہ کیا ۔ نرسمہا نے حکومت کو انتباہ دیا کہ اگر حکومت خود کشی واقعات کے تدارک کے لیے اقدامات کرنے میں ناکام ہوجائے تو سی پی آی حکومت کے خلاف جدوجہد میں شدت پیدا کرے گی ۔ اس پروگرام میں تلنگانہ مہیلا سمکیا صدر ایس چھایا دیوی ، سی پی آئی سٹی ایگزیکٹیو ممبر کے چندو ، اے آئی ٹی یو سی ساوتھ زون سکریٹری کے یادگیری ، سی پی آئی کونسل ممبر جی چندرا موہن اور دوسروں نے حصہ لیا ۔۔

TOPPOPULARRECENT