Friday , August 18 2017
Home / شہر کی خبریں / کسانوں کی خود کشی پر حکومت اپنا موقف تبدیل کرے

کسانوں کی خود کشی پر حکومت اپنا موقف تبدیل کرے

ریاستی وزراء پوچارم سرینواس ریڈی ، ٹی ناگیشور راؤ کے حالیہ بیانات کی مذمت : محمد علی شبیر کا بیان
حیدرآباد ۔ 12 ۔ ستمبر : ( این ایس ایس ) : کانگریس کے سینئیر قائد اور تلنگانہ قانون ساز کونسل میں قائد اپوزیشن محمد علی شبیر نے آج ٹی آر ایس حکومت کو مشورہ دیا کہ وہ کسانوں کی خود کشی پر اس کے موقف میں تبدیلی لائے اور اس کمیونٹی کی مدد کرے ۔ یہاں گاندھی بھون میں کسان سیل چیرمین ایم کودنڈا ریڈی کے ساتھ میڈیا سے مخاطب کرتے ہوئے محمد علی شبیر نے کہا کہ 1500 کسانوں نے خود کشی کی ہے جب کہ وزراء کسانوں کے خود کشی واقعات کے پوسٹ مارٹم کو شمار کرتے ہوئے اعداد کو کم کرنے کی کوشش کررہے ہیں ۔ انہوں نے وزراء پوچارم سرینواس ریڈی اور ٹی ناگیشور راؤ پر کسانوں کی خود کشی مسئلہ پر ان کے حالیہ بیانات کے لیے سخت تنقید کی ۔ ضلع نظام آباد کے راما ریڈی ویلیج میں لمبیا کے خاندان سے ملاقات کرنے کا ذکر کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ اس خاندان سے ملاقات کی کیوں کہ وہ ایک کسان تھا اور خود کشی کی تھی ۔ انہوں نے کہا کہ اس خاندان کو مالی مدد فراہم کی گئی کیوں کہ اسے مدد کی فوری ضرورت تھی ۔ انہوں نے کہا کہ خود کشی واقعات جیسے مسائل پر سیاست غریب کسانوں اور ان کے خاندانوں کو مزید نقصان کا باعث ہوگی ۔ کانگریس قائد نے ٹی آر ایس قائدین سے پوچھا کہ وہ یہ بتائیں کہ انہوں نے خود کشی کرنے والے کسانوں کے خاندانوں کے لیے کیا کیا ہے ۔ حالانکہ نیشنل کرائم ریکارڈس بیورو ( این سی آر بی ) نے ایف آئی آرس کی اساس پر کسانوں کی خود کشی کے 1127 کیسیس ریکارڈ کئے ہیں اور ٹی آر ایس حکومت بار بار ان اعداد سے انکار کررہی ہے ۔ حکومت نے مختلف محکمہ جات کے لیے 500 کروڑ روپئے سے زائد مالیت کی نئی گاڑیوں کی خریدی کو ترجیح دی ہے جب کہ اس نے کسانوں کو کوئی راحت فراہم نہیں کی ۔۔

TOPPOPULARRECENT