Monday , September 25 2017
Home / Top Stories / کشتی میں 40 تارکین کی دَم گھٹنے سے موت

کشتی میں 40 تارکین کی دَم گھٹنے سے موت

عرشہ کے نیچے تنگ جگہ میں رکھاگیا ، 300 سے زائد افراد کا پر خطر سفر
روم ۔ 15 ۔ اگست : ( سیاست ڈاٹ کام) : بحیرہ روم میں زائد از 40 نقل مقام کرنے والوں کی موت واقع ہوگئی ۔ اٹلی کی بحریہ کے بموجب یوروپ لے جارہی کشتی کے عرشہ کے نیچے دم گھٹنے کی وجہ سے ان تمام کی موت کا شبہ ہے ۔ بحریہ نے ٹوئٹر پر لکھا کہ ’’آپریشن جاری ہے ۔ کئی تارکین کو بچالیا گیا ، تقریبا 40 ہلاک ہوگئے ‘‘ ۔ اخبار کوریرڈیلا یسرا کے بموجب جو لوگ ہلاک ہوئے وہ سب جہاز کی تنگ جگہ پائے گئے ۔ اٹلی کے جزیرہ لیپمی ڈوسا میں اس کشتی کا پتہ چلایا گیا تھا جس میں تقریبا 300 افراد سوار تھے ۔ اٹلی بحریہ کے ہیلی کاپٹر نے اس کشتی کی نشاندہی کی جس میں گنجائش سے زیادہ لوگ تھے اور یہ ڈوبنا شروع ہورہی تھی ۔ چنانچہ بحریہ کے جہاز کو فوری روانہ کیا گیا اور ا س کے یہاں پہنچنے پر جو تقریبا 21 میل دور واقع ہے ۔ اس حقیقت کا پتہ چلا ۔ لیبیا سے نقل مقام کررہے بے شمار بچ جانے والے افراد نے بتایا کہ کس طرح انہیں کشتی کے نچلے حصے میں مقفل کردیا جاتا ہے ۔ ان میں اکثر سیاہ فام افریقی باشندے ہوتے ہیں جو زیادہ رقم ادا نہیں کرتے ۔ انہیں تنگ جگہوں میں بند کردیا جاتا ہے جہاں کشتی بھنور میں ہونے سے ان کی موت واقع ہوتی ہے بلکہ کئی لوگ ڈیزل کے شعلوں کی وجہ سے بھی موت کے منہ میں چلے جاتے ہیں ۔ یوروپی یونین نے کل ہی کہا تھا کہ یوروپ عالمی جنگ دوم کے بعد بدترین پناہ گزیں بحران سے دوچار ہے۔
جاریہ سال کے آغاز سے اب تک 101,700 تارکین کشتی کے ذریعہ اٹلی پہنچے ہیں اور تقریبا 2,040 کی اس پر خطر سفر میں موت واقع ہوئی ہے ۔۔

TOPPOPULARRECENT