Tuesday , August 22 2017
Home / پاکستان / کشمیر، ہندوستان کا داخلی مسئلہ نہیں: نواز شریف

کشمیر، ہندوستان کا داخلی مسئلہ نہیں: نواز شریف

Under portraits of the late Iranian revolutionary founder Ayatollah Khomeini, right, and Supreme Leader Ayatollah Ali Khamenei, Pakistani Prime Minister Nawaz Sharif sits during his meeting with Iranian President Hassan Rouhani in Tehran, Iran, Tuesday, Jan. 19, 2016. (AP Photo/Vahid Salemi)

استصواب عامہ ناگزیر،کشمیریوں سے اظہاریگانگت کیلئے پاکستان میں یوم سیاہ
اسلام آباد ۔ 20 جولائی (سیاست ڈاٹ کام) پاکستان نے وادی کشمیر کے عوام سے اظہار یگانگت کیلئے آج یوم سیاہ منایا جس کا کوئی خاص عوامی ردعمل نہیں رہا۔ وزیراعظم نواز شریف نے آج کہا کہ کشمیر، ہندوستان کا داخلی مسئلہ نہیںہے اور اس (ہندوستان) سے کہا کہ کشمیریوں کے حقوق کے احترام کیلئے وہاں (کشمیر میں) استصواب عامہ کروایا جائے۔ نواز شریف نے یوم سیاہ کے موقع پر اپنے پیغام میں کہا کہ ’’کشمیریوں سے اظہاریگانگت کیلئے آج ہم یوم سیاہ منارہے ہیں اور دنیا کو یہ طاقتور پیغام دے رہے ہیں کہ حقوق کے لئے کشمیریوں کی جدوجہد میں پاکستانی ان کے ساتھ ہیں۔ نواز شریف نے مزید کہا کہ ’’کشمیریوں کی آواز کو ہندوستان طاقت کے بل بوتے پر نہیں کچل سکتا کیونکہ وہ بالآخر آزادی حاصل کریں گے۔ اقوام متحدہ نے بھی کشمیر کو متنازعہ علاقہ قرار دیا ہے اور کشمیریوں کے حقوق کے احترام کیلئے ہندوستان کو وہاں استصواب عامہ کروانا چاہئے۔ مسئلہ کشمیر کو ہندوستان کا داخلی معاملہ قرار دینا منصفانہ نہیں ہے‘‘۔ نواز شریف نے کہا کہ ہندوستان مقبوضہ علاقہ میں انسانی حقوق کی خلاف ورزی کررہا ہے جو ساری عالمی برادری کیلئے سنگین تشویش کا باعث ہے۔ پاکستانی وزیراعظم نے قبل ازیں اپنے تمام متعلقہ محکمہ جات کو ہدایت کی کہ مختلف بین الاقوامی اداروں میں مسئلہ کشمیر کو اجاگر کیا جائے۔ مسئلہ کشمیر پر عالمی توجہ مرکوز کرنے کیلئے سارے پاکستان کے علاقہ پاکستانی مقبوضہ کشمیرمیں منائے گئے یوم سیاہ کے دوران ریالیاں اور جلسے منعقد کئے گئے۔ وفاقی و صوبائی حکومتوں کے تمام اہلکاروں نے کشمیریوں سے ’’سیاسی، اخلاقی اور سفارتی تائید کے اظہار کیلئے ڈیوٹی کے دوران اپنے بازوؤں پر سیاہ پٹیاں باندھ رکھا تھا۔ حزب المجاہدین کے کمانڈر برہان وانی کی ہندوستانی سیکوریٹی فورسیس کے ساتھ انکاؤنٹر میں ہلاکت کے خلاف وادی کشمیر میں پھوٹ پڑنے والے تشدد میں ہلاک ہونے والے کشمیریوں کیلئے غائبانہ نماز جنازہ ادا کی گئی۔ 2008ء کے ممبئی حملوں کے اصل سازشی سرغنہ حافظ سعید کی زیرقیادت جماعت الدعوہ کا ’’کشمیرکاروان‘‘ لاہور سے اسلام آباد روانہ ہوا تھا۔ اسلام آباد کے قریب پہنچ گیا ہے جہاں بڑے جلسہ عام کا انعقاد عمل میں لایا گیا ہے۔ حافظ سعید نے گذشتہ روز عہد کیا تھا کہ کشمیریوں کی آزادی تک جموں و کشمیر کی سمت مارچ جاری رکھا جائے گا۔ برہان وانی کی 8 جولائی کو ہلاکت کے بعد سیکورٹی فورسیس سے جھڑپ میں تاحال کم سے کم 43 افراد ہلاک ہوچکے ہیں۔

TOPPOPULARRECENT