Saturday , July 22 2017
Home / Top Stories / کشمیر کی صورتحال پر پی ڈی پی ۔ بی جے پی میٹنگ

کشمیر کی صورتحال پر پی ڈی پی ۔ بی جے پی میٹنگ

وادی میں کالجس لگاتار چوتھے روز بند رہے
جموں ؍ سرینگر 21 اپریل (سیاست ڈاٹ کام) جموں و کشمیر میں مخلوط حکومت کے شرکاء پی ڈی پی اور بی جے پی کے درمیان تناؤ بڑھ رہا ہے اور اِس پس منظر میں دونوں پارٹیوں کی آج یہاں بند دروازوں کے ساتھ میٹنگ منعقد ہوئی جبکہ چند روز میں قومی صدر بی جے پی امیت شاہ اِس ریاست کا دو روزہ دورہ کرنے والے ہیں۔ بی جے پی کے نیشنل جنرل سکریٹری رام مادھو، قومی نائب صدر اویناش رائے کھنہ اور پی ڈی پی کے وزیر حسیب درابو کی بی جے پی ہیڈکوارٹرس میں 90 منٹ طویل میٹنگ ہوئی جہاں ریاست کی ابتر ہوتی صورتحال پر غور و خوض کیا گیا۔ بعدازاں اویناش کھنہ نے اخباری نمائندوں کو بتایا کہ ہم نے میٹنگ منعقد کرتے ہوئے جموں و کشمیر کی صورتحال کا جائزہ لیا ہے۔ اِس اجلاس کی اِس تناظر میں اہمیت ہے کہ بی جے پی کے وزیر چندر پرکاش گنگا کے حالیہ بیان پر حلیف پارٹیوں کے درمیان کشیدگی بڑھنے لگی ہے۔ اُنھوں نے بیان دیا تھا کہ غداروں اور سنگباری کرنے والوں سے گولیوں سے نمٹنا چاہئے۔ دریں اثناء وادیٔ کشمیر میں کالجس آج لگاتار چوتھے روز معطل رہے اور حکام نے اعلیٰ تعلیم کے اداروں میں احتیاطی اقدام کے طور پر آج کی حد تک تدریسی کام روک دیا۔

کشمیری افراد کے تخلیہ کیلئے میرٹھ میں بیانرس ، ایف آئی آر درج

میرٹھ ، 21 اپریل (سیاست ڈاٹ کام) کشمیریوں کا بائیکاٹ کرنے اور وادی سے تعلق رکھنے والے افراد سے اترپردیش چھوڑ دینے کی بات کہنے والے بیانرس کشمیر میں سکیورٹی فورسیس پر سنگباری کے واقعات کے تناظر میں اس ضلع میں لگائے گئے ہیں۔ اس کا نوٹ لیتے ہوئے پولیس نے امیت جانی کے خلاف ایف آئی آر درج کرلیا ، جو اترپردیش نو نرمان سینا کا سربراہ ہے۔ یہ نسبتاً غیرمعروف تنظیم ہے جس نے بیانرس لگائے ہیں۔ جانی نے کہا کہ ان لوگوں نے بیانرس اور ہورڈنگس پرتاپور بائی پاس پر وہ کالجوں کے باہر لگائے ہیں جہاں کشمیری اسٹوڈنٹس پڑھتے ہیں۔ سینا نے کہا کہ یہ تو ابتدائی اقدام ہے اور وہ 30 اپریل سے ’’ہلہ بول‘‘ مہم شروع کردے گی تاکہ ان کشمیریوں کو ’’شہر بدر‘‘ کردیا جائے جو خود سے ریاست نہیں چھوڑتے ہیں۔

Leave a Reply

TOPPOPULARRECENT