Friday , July 21 2017
Home / Top Stories / کشمیری نوجوانوں کیلئے دو راستے ، سیاحت یا دہشت گردی:وزیراعظم

کشمیری نوجوانوں کیلئے دو راستے ، سیاحت یا دہشت گردی:وزیراعظم

40 سال سے جاری خون کی ہولی کا کوئی فائدہ نہیں،کشمیر میں سب سے لمبی سرنگ کا افتتاح

سرینگر ۔ /2 اپریل (سیاست ڈاٹ کام) وزیراعظم نریندر مودی نے کہا کہ کشمیر کے نوجوانوں کے پاس صرف دو راستے ہیں ۔ یا تو وہ سیاحت کا انتخاب کریں یا پھر دہشت گردی اختیار کریں ۔ انہوں نے کہا کہ وادی کشمیر میں گزشتہ 40 سال سے کھیلے جارہے خون کی ہولی سے کوئی فائدہ نہیں ہوا ہے ۔ جموں سرینگر ہائی وے پر تعمیر کی گئی چینانی ۔ ناشری نامی 9.2 کیلو میٹر لمبی سرنگ کے افتتاح کے بعد وزیراعظم مودی نے کشمیر نوجوانوں کو مخاطب کیا اور کہا کہ وادی کے نوجوانوں کو فیصلہ کرنا ہوگا کہ وہ کس کے ساتھ ہیں ۔ پاکستان کا نام لئے بغیر اسے نشانہ بناتے ہوئے انہوں نے کہا کہ سرحد کے اس پار رہنے والے خود کو ہی نہیں سنبھال پارہے ہیں ۔ وادی کشمیر میں ایک طرف گمراہ نوجوان سکیورٹی فورس پر پتھر مارنے  میں مصروف ہیں تو دوسری طرف  کشمیری لوگ پتھر کاٹ کر سرنگ بنارہے ہیں ۔ یہ سرنگ ریاست جموں و کشمیر کی ترقی میں ایک اہم قدم ثابت ہوگی ۔ یہ سرنگ 286 کیلو میٹر لمبی جموں سرینگر ہائی وے کا حصہ ہے ۔ اس سے اس نیشنل ہائی وے 44 پر سفر کرنے والی گاڑیوں کو دو گھنٹے کی مسافت میں کمی ہوگی ۔ سرنگ کی وجہ سے برفباری اور زمین کھسکنے کے خطرات سے بھی بچا جاسکتا ہے ۔ چینانی ۔ ناشری سرنگ دنیا کی ایسی چھٹویں سرنگ ہے جس میں ہر 8 میٹر کے فاصلہ پر ایسے راستے بنائے گئے ہیں جس سے ہوا کا گزر ہوتا ہے ۔ پانچ سال کے عرصہ میں تعمیر ہونے والی یہ سرنگ سطح سمندر سے 4 ہزار فٹ اونچائی پر بنائی گئی ہیں ۔ وادی کشمیر کیلئے یہ سرنگ نعمت بن کر آئی ہے ۔
سرینگر میں بم حملہ
پولیس جوان ہلاک، 11 زخمی
سرینگر ۔ /2 اپریل (سیاست ڈاٹ کام) سرینگر کے نوہٹہ علاقہ میں ایک بم حملہ کیا گیا جس میں ایک پولیس ملازم ہلاک اور دیگر 11 زخمی ہوئے ہیں ۔ پولیس ترجمان نے بتایا کہ شام 7 بجے کے قریب انتہاپسندوں نے سکیورٹی عملہ کی گشتی ٹیم پر گرینیڈ پھینکا ۔ جس میں 11 سکیورٹی جوان اور 4 پولیس ملازمین زخمی ہوئے ۔ یہ حملہ اس وقت کیا گیا جب وزیراعظم نریندر مودی جموں و کشمیر کا دورہ کررہے تھے ۔ اسی دوران بتایا جاتا ہے کہ پولیس کی تلاشی مہم کے دوران ضلع بارہمولہ کی ایک سب جیل سے 14 موبائیل فون ضبط کئے گئے جن کومبینہ طور پر قیدی استعمال کرتے ہوئے  واٹس اپ کے ذریعہ پاکستان میں اپنے رابطہ کاروں سے بات چیت کررہے تھے ۔

Leave a Reply

TOPPOPULARRECENT