Tuesday , September 26 2017
Home / ہندوستان / کشمیری پنڈتوں کے قتل عام کی تحقیقات کی درخواست سپریم کورٹ میں مسترد

کشمیری پنڈتوں کے قتل عام کی تحقیقات کی درخواست سپریم کورٹ میں مسترد

نئی دہلی ۔ 24 جولائی (سیاست ڈاٹ کام) سپریم کورٹ نے وادی کشمیر میں 1989-90ء کے دوران عسکریت پسندی کے عروج کے دوران کشمیری پنڈتوں کے اجتماعی قتل عام کی تحقیقات کیلئے دائر کردہ درخواست کو آج مسترد کردیا اور کہا کہ اس سے کوئی ثمر آور مقصد حاصل نہیں ہوگا کیونکہ اس تاخیر پذیر مرحلے میں کوئی ثبوت ملنے کی توقع بھی نہیں کی جاسکتی۔ ’’روٹس ان کشمیر‘‘ سے موسوم ایک تنظیم نے یہ درخواست دائر کرتے ہوئے ادعا کیا تھا کہ کشمیری پنڈتوں کے قتل اور دیگر ہولناک جرائم کے تعلق سے 215 ایف آئی آر درج کئے گئے تھے اور کوئی بھی مقدمہ کسی منطقی انجام پر نہیں پہنچا۔ چیف جسٹس جے ایس کھیہر اور جسٹس ڈی وائی چندراچوڑ پر مشتمل بنچ نے کشمیری پنڈتوں کے کاز کو اٹھانے میں 27 سال کی تاخیر کے حوالے کو درخواست مسترد کرنے کی اصل وجہ بتایا اور کہا کہ اس مرحلے پر کوئی ثبوت دستیاب نہیں ہوسکتا۔ ایک ایڈوکیٹ وکاس پڈورا اس ضمن میں درخواست گذار کی طرف سے عدالت عظمیٰ سے رجوع ہوئے تھے۔

TOPPOPULARRECENT