Sunday , August 20 2017
Home / Top Stories / کشمیر میں بدترین سیلاب کی پہلی سالانہ یاد پر بند

کشمیر میں بدترین سیلاب کی پہلی سالانہ یاد پر بند

بازآباد کاری کے وعدے لیکن عمل ندارد، عمر عبداللہ کا الزام
نئی دہلی ۔ 7 ستمبر (سیاست ڈاٹ کام) کشمیر میں بدترین سیلاب کی آج پہلی سالانہ یاد منائی گئی۔ اس موقع پر اپوزیشن نیشنل کانفرنس کے علاوہ علحدگی پسند تنظیموں اور تجارتی اداروں نے گذشتہ سال کے بدترین سیلاب میں 300 افراد کی ہلاکتوں اور بڑے پیمانے پر مالی نقصانات کی یاد تازہ کرتے ہوئے متاثرین کی امداد باز آباد کاری کیلئے ریاستی حکومت کی طرف سے مؤثر اقدامات نہ کئے جانے کے خلاف بند منایا، جس کے نتیجہ میں اکثر تعلیمی و تجارتی ادارے بند رہے۔ تاہم حکومت نے کئی تجارتی تنظیموں کے قائدین کو گرفتار اور علحدگی پسند قائدین کو گھر پر نظربند کرتے ہوئے احتجاج کے منصوبوں کو ناکام بنادیا۔ نیشنل کانفرنس کے لیڈر عمر عبداللہ نے مرکز اور ریاستی حکومت پر تنقید کرتے ہوئے کہا کہ متاثرہ عوام کو امداد پہنچانے کیلئے دونوں حکومتوں نے بلند بانگ وعدے کئے تھے لیکن تاحال ہمیں کچھ حاصل نہیں ہوا ہے۔ چیف منسٹر مفتی محمد سعید نے اعتراف کیا ہیکہ دوبارہ تعمیر و بازآباد کاری کے سارے عمل میں ہنوز کچھ خلا باقی ہے جس کو بعجلت ممکنہ پُر کرنے کی ضرورت ہے۔ نیشنل کانفرنس کی اپیل پر منائی گئی بند کے نتیجہ میں سارے کاروبار بند رہے اور وادی میں عام زندگی معطل رہی۔

TOPPOPULARRECENT