Friday , September 22 2017
Home / Top Stories / کشمیر میں تشدد اور آتشزنی کا سلسلہ جاری ، جملہ 23 ہلاکتیں

کشمیر میں تشدد اور آتشزنی کا سلسلہ جاری ، جملہ 23 ہلاکتیں

علحدگی پسندوں کی ہڑتال میں دو دن توسیع ، وزیراعظم مودی آج صورتحال کا جائزہ لیں گے
نئی دہلی ؍ سرینگر ۔ 11 جولائی۔ ( سیاست ڈاٹ کام ) وادی کشمیر میں آج تیسرے دن بھی تشدد اور آتشزنی کا سلسلہ جاری رہا جبکہ قومی سلامتی کے مشیر اجیت ڈول کینیا سے فوری ملک واپس ہوگئے ہیں تاکہ صورتحال کو قابو میں کرنے میں مدد کی جاسکے ۔ تشدد کے باعث مرنے والوں کی تعداد 23 ہوچکی ہے ۔ کشمیر میں حالات اب بھی دھماکو ہیں اور کرفیو جیسی تحدیدات کے علاوہ علحدگی پسندوں کی ہڑتال کے باعث عام زندگی مفلوج ہوچکی ہے ۔ سنٹرل پیراملٹری فورسیس کے 800 زائد ارکان کو فوری جموںو کشمیر روانہ کیا گیا ہے ۔ یہ تعداد پہلے سے موجود 1200 جوانوں کے علاوہ ہوگی جو ریاستی پولیس کی مدد کررہے ہیں ۔ کل تشدد میں جو دو افراد ہلاک ہوئے تھے اُن کی 22 سالہ فیروز احمد میر اور 38 سالہ خورشید احمد میر کی حیثیت سے شناخت کی گئی ۔ اس کے بعد مرنے والوں کی تعداد 23 ہوچکی ہے اور تقریباً 250 افراد زخمی ہوئے ہیں۔ احتجاجیوں کے ایک گروپ نے آج پلواما ایرفورس ایرپورٹ پر سنگباری کی، اس کے علاوہ ایرپورٹ کامپلکس کے باہر سوکھی گھانس کو آگ لگادی۔ سکیورٹی فورسیس نے ہجوم کا تعاقب کیا لیکن حملہ آور وقفہ وقفہ سے سنگباری کرتے رہے ۔ شمالی کشمیر کے بارہمولہ اور سوپور ، ہندواڑہ ، باندی پورہ میں بھی سنگباری کے واقعات پیش آئے ۔ احتجاجیوں نے سوپور میں ایک پولیس اسٹیشن کو نذر آتش کردیا۔ اس دوران علحدگی پسندوں نے جاری ہڑتال میں دو دن کی توسیع کا اعلان کیا ہے ۔ انھوں نے حکومت کی عام حالات کی بحالی میں مدد کی اپیل کو بچکانہ اور غیرمنطقی قرار دیا۔ ایک بیان میں کہا گیا ہے کہ 13 جولائی کو یوم عہد کے طورپر منایا جائے گا اور تمام تین علحدگی پسند قائدین بشمول سید علی شاہ گیلانی ، میر واعظ عمر فاروق اور یٰسین ملک حیدر پورہ جامع مسجد سے مزار شہداء تک مارچ کریں گے۔ مرکزی وزیر داخلہ راج ناتھ سنگھ نے سینئر وزراء اور عہدیداروں کے ہمراہ آج کشمیر کی صورتحال کا جائزہ لیا ۔ اس موقع پر سکیورٹی فورسیس کو ہدایت دی گئی ہے کہ طاقت کے استعمال میں احتیاط برتیں اور امرناتھ یاتریوں کا محفوظ سفر یقینی بنائیں۔ وزیراعظم نریندر مودی حزب المجاہدین کمانڈر برھان وانی کی ہلاکت کے بعد پیداشدہ صورتحال کا کل بیرونی دورہ سے واپسی کے بعد جائزہ لیں گے ۔ ایک سرکاری عہدیدار نے بتایا کہ وزیراعظم کو صورتحال کے بارے میں تفصیلات سے واقف کروایا جائے گا۔
کشمیر جل رہا ہے ، مودی بانسری بجارہے ہیں: کانگریس
نئی دہلی ۔ 11 جولائی۔ ( سیاست ڈاٹ کام ) کانگریس نے وزیراعظم نریندر مودی کے سفر اور طبلہ بجانے کے بارے میں ٹوئیٹس کا حوالہ دیتے ہوئے کہا کہ ’’کشمیر جل رہا ہے اور ہمارے وزیراعظم بانسری بجارہے ہیں ‘‘ ۔ پارٹی ترجمان رندیپ سرجیوالا نے مودی کے ٹوئٹ کے جواب میں ٹوئٹ کیا کہ انھیں اپنا دورہ مختصر کرکے ملک واپس ہونا چاہئے کیونکہ کشمیر کے حالات دھماکو ہیں ۔ انھوں نے وزیراعظم کو صدر امریکہ براک اوباما کی مثال دی جنھوں نے ڈلاس میں گولی چلانے کے واقعات کے بعد اپنا دورہ مختصر کردیااور ملک واپس ہوگئے ۔ ایک علحدہ بیان میں ابھیشیک سنگھوی نے پاکستان پر تنقید کی ۔

TOPPOPULARRECENT