Tuesday , October 17 2017
Home / Top Stories / کشمیر میں سیکوریٹی فورسیس کی فائرنگ سے مسلسل ہلاکتیں

کشمیر میں سیکوریٹی فورسیس کی فائرنگ سے مسلسل ہلاکتیں

ظلم و زیادتی کے خلاف زبردست احتجاجی مظاہروں سے صورتحال مزید ابتر

سرینگر۔/15اپریل، ( سیاست ڈاٹ کام ) کشمیر کے ضلع کپواڑہ میں آج احتجاجیوں کو منشتر کرنے کیلئے سیکوریٹی فورسیس کی فائرنگ میں ایک نوجوان ہلاک اور دیگر 3شدید زخمی ہوگئے۔ جبکہ یہ ہجوم احتجاج کے دوران فوجی کیمپ پر سنگباری کررہا تھا۔ کپواڑہ اور متصل علاقوں میں 3افراد کی موت کے چوتھے کے موقع پر آج زبردست احتجاجی مظاہرے کئے گئے جبکہ ان افراد کو ہنڈواڑہ ٹاؤن میں ایک لڑکی کے ساتھ مبینہ دست درازی کے واقعہ کے خلاف مظاہرہ کے دوران سیکوریٹی فورسیس نے فائرنگ میں ہلاک کردیا تھا۔ ایک پولیس عہدیدار نے بتایا کہ 4افراد اسوقت زخمی ہوگئے جب تشدد پر آمادہ ایک ہجوم پر سیکوریٹی فورسیس نے فائرنگ کردی۔ یہ گروپ کپواڑہ کے علاقہ ناتھو نسا میں واقع ایک فوجی کیمپ پر سنگباری کررہا تھا۔ فائرنگ میں شدید زخمی ایک نوجوان عارف احمد جانبر نہ ہوسکا۔ شمالی کشمیر میں آج تازہ اموات پر صورتحال مزید ابتر ہوگئی کیونکہ ان ہلاکتوں کے خلاف ہجوم درہجوم سڑکوں پر نکل آیا۔

علاوہ ازیں جنوبی کشمیر اور سرینگر شہر کے بیشتر مقامات پر بھی احتجاج کی اطلاعات ہیں لیکن کوئی جانی نقصان نہیں ہوا ۔ ہنڈواڑہ ٹاؤن میں منگل کے دن ایک اسکولی طالبہ کے ساتھ بعض فوجیوں کی دست درازی کے مبینہ واقعہ کے خلاف سلسلہ وار احتجاج کے دوران کشمیر میں 4افراد ہلاک کردیئے گئے جس کے باعث حالات کشیدہ سے کشیدہ ہوتے جارہے ہیں۔ دریں اثناء علحدگی پسند تنظیموں بشمول سید علی شاہ گیلانی کی زیر قیادت شدت پسند حریت کانفرنس نے تازہ ہلاکتوں کے خلاف کل مکمل بند منانے کا اعلان کیا ہے جس کے پیش نظر کشمیر یونیورسٹی نے ہفتہ کے دن منعقد ہونے والے تمام امتحانات ملتوی کردیئے ہیں۔یونیورسٹی کے ترجمان نے بتایا کہ امتحانات کی نئی تاریخ کا متعاقب اعلان کیا جائے گا۔ کشمیر کے بیشتر علاقوں میں آج تیسرے دن بھی کرفیو جیسی صورتحال دیکھی گئی جہاں پر منگل سے موبائیل، انٹرنیٹ سرویس کو منقطع کردیا گیا۔ جبکہ شمالی کشمیر کے کپواڑہ ٹاؤن، کرلا گنڈ، ہنڈواڑہ، ماتھم اور لنگیٹ علاقوں میں امن و قانون کی برقراری کیلئے امتناعی احکامات نافذ کردیئے گئے ہیں۔ سرینگر کے قلب شہر لال چوک کی خاردار تاروں کے ذریعہ گھیراب ندی کردی گئی ہے جو کہ احتجاج کا مرکز اور منبع تصور کیا جاتا ہے۔ کشیدہ صورتحال کے پیش نظر آج مارکٹس کو بند اور عوامی ٹرانسپورٹ کو سڑکوں سے ہٹادیا گیا تھا۔

TOPPOPULARRECENT