Thursday , September 21 2017
Home / ہندوستان / کشمیر میں مبینہ سرکاری دہشت گردی کا الزام

کشمیر میں مبینہ سرکاری دہشت گردی کا الزام

مودی کے تبصرے پر پاکستانی سینٹ میں قررداد منظور
اسلام آباد ۔16جنوری ۔ ( سیاست ڈاٹ کام )پاکستان نے آج ہندوستانی فوج کی جانب سے جنوبی کشمیر میں تین عسکریت پسندوں کو ہلاک کردینے کی اور اسے انکاؤنٹر قرار دینے کی مذمت کرتے ہوئے کہا کہ یہ سرکاری دہشت گردی کا تسلسل ہے اور اقوام متحدہ کی حقوق انسانی کمیٹی پر زور دیا ہے کہ بین الاقوامی برادری کو اس سلسلے میں مداخلت کرنا چاہئے ۔ دفتر خارجہ سے جاری کردہ بیان میں کشمیریوں کی منظم انداز میں بے رحمانہ ہلاکت کی مذمت کرتے ہوئے پاکستان نے اقوام متحدہ پر مداخلت کے لئے زور دیاہے ۔ اس کا کہنا ہے کہ ہندوستانی فوج علی الاعلان (کشمیر میں ) انسانیت سوز جرائم کا ارتکاب کررہی ہے ۔ دریں اثناء پاکستانی سینٹ میں متفقہ طورپر ایک قرارداد منظور کرتے ہوئے وزیراعظم نریندر مودی کے ’’دہشت گردی کی رکنیت ‘‘ والے تبصرے کی سخت الفاظ میں مذمت کی گئی اور اسے ’’بے بنیاد پروپگنڈہ ‘‘ قرار دیتے ہوئے مسترد کردیا گیا ۔ قرارداد میں کہا گیا ہے کہ یہ تبصرہ کشمیر میں مظالم کی جانب سے بین الاقوامی برادری کی توجہ ہٹانے کی کوشش ہے ۔ یہ قرارداد رکن سنیٹ پاکستان پیپلز پارٹی سحر کامران نے پیش کی تھی جسے پاکستانی سنیٹ نے متفقہ منظوری دیدی ۔ گوا میں اکٹوبر میں بریکس چوٹی کانفرنس کے دوران مودی نے پاکستان کو ’’دہشت گردی کا رُکن ‘‘ قرار دیتے ہوئے اسے دنیا بھر کے دہشت گردوں سے مربوط قرار دیا تھا۔

TOPPOPULARRECENT