Sunday , October 22 2017
Home / سیاسیات / کشمیر میں یتیم لڑکے کے تعلیمی مصارف کی ادائیگی

کشمیر میں یتیم لڑکے کے تعلیمی مصارف کی ادائیگی

مقامی ایم پی اور مرکزی وزیر جتیندر سنگھ کی پیشکش
جموں ۔ 8 ۔ فروری : ( سیاست ڈاٹ کام) : ایک مقتول ولیج ڈیفنس کمیٹی رکن کے کمسن فرزند کے لیے دست تعاون دراز کرتے ہوئے مرکزی وزیر جتیندر سنگھ نے آج اس لڑکے کے تعلیمی مصارف ادا کرنے کی پیشکش کی ہے ۔ جب کہ غریب خاندان کے اس لڑکے کو حصول تعلیم میں مشکلات پیش آرہی ہیں ۔ 17 سالہ سوناک کے والد کو سال 2001 میں عسکریت پسندوں نے گولی مار کر ہلاک کردیا تھا جو کہ ولیج ڈیفنس کمیٹی کارکن تھا ۔ مذکورہ لڑکے کی والدہ نیما دیوی نے جو کہ گذر بسر کے لیے معمولی نوکری کرتی ہے بتایا کہ دسویں جماعت کے امتحانات میں سوناک نے 92 فیصد نشانات حاصل کئے ہیں لیکن معاشی مجبوری کی وجہ سے وہ تعلیم جاری رکھنے سے قاصر ہے ۔ انہوں نے یہ شکایت کی کہ ایک عسکریت پسند کے لڑکے کی امداد کے لیے کئی افراد آگے آئے ہیں جس نے پارلیمنٹ میں پر حملہ کیا تھا تاہم اس کا لڑکا شاندار نشانات حاصل کیا ہے ۔ لیکن میرے لڑکے کی اعانت کے لیے کوئی بھی نہیں آیا ۔ تاہم معاشی مشکلات کے باوجود بہترین نشانات حاصل کرنے پر سوناک (Sunak) کی ستائش کرتے ہوئے مملکتی وزیر برائے وزیراعظم دفتر ( پی ایم او ) مسٹر جتیندر سنگھ نے آج یہ اعلان کیا اس لڑکے کے تعلیمی اخراجات وہ برداشت کریں گے ۔ انہوں نے نیما دیوی سے ملاقات کے فوری بعد ڈپٹی کمشنر ادہم پور کو طلب کیا اور بتایا کہ اس علاقہ کے رکن پارلیمنٹ کی حیثیت سے مذکورہ طالب علم کے تمام تعلیمی مصارف بذات خود ادا کریں گے ۔ مسٹر جتیندر سنگھ جو کہ ادہم پور ۔ دوڈا ۔ کٹھوا حلقہ پارلیمان کے رکن ہیں ۔ ڈپٹی کمشنر شاہد اقبال کو ہدایت دی کہ ان کا یہ پیام طالب علم کے خاندان کو پہنچائیں ۔ جب کہ مقتول باپ کے بیٹے نے کہا کہ وہ ایرفورس آفیسر بن کر دہشت گردی کا مقابلہ کرتے ہوئے ملک کی خدمت کرنا چاہتا ہوں ۔ اس لڑکے نے اس عزم کا اظہار کیا کہ وہ اپنے باپ کی موت کا بدلہ گن ( بندوق ) سے نہیں پین ( قلم ) سے لیں گے ۔ مسٹر جتیندر سنگھ نے بتایا کہ سابق میں بھی انہوں نے دہشت گردی سے متاثرہ طلباء کی امداد کی ہے ۔۔

TOPPOPULARRECENT