Tuesday , September 26 2017
Home / ہندوستان / کشمیر : پامپورہ میں انکاؤنٹر ختم ، تین عسکریت پسند ہلاک

کشمیر : پامپورہ میں انکاؤنٹر ختم ، تین عسکریت پسند ہلاک

مقامی عوام کی سکیورٹی فورسیس سے جھڑپ ، نعرہ بازی اور سنگباری کے واقعات
سرینگر ۔ 22 فبروری ۔ ( سیاست ڈاٹ کام )سرینگر کے مضافات میں 48 گھنٹوں سے جاری گھمسان کی لڑائی آج اختتام کو پہنچی اور تین مسلح عسکریت پسندوں کو ہلاک کردیا گیا۔ ایک پولیس عہدیدار نے بتایا کہ پامپورہ میں سرکاری عمارت میں پناہ لینے والے تین عسکریت پسندوں کو ہلاک کرتے ہی یہ انکاؤنٹر ختم ہوا ۔ فوجی اہلکار نے جو سارے آپریشن کی نگرانی کررہے تھے بتایا کہ ان عسکریت پسندوں کے پاس سے جنگی ساز و سامان بشمول اسلحہ و گولہ بارود کا بھاری ذخیرہ برآمد کیا گیا ۔ قبل ازیں سرکاری عمارت میں محصور انتہاپسندوں کے ساتھ انکاؤنٹر آج تیسرے دن میں داخل ہوگیا تھا ۔ سرینگر ۔ جموں قومی شاہراہ پر واقع ای ڈی آئی عمارت میں عسکریت پسند موجود تھے اور کل عمارت سے آگ کے شعلے بھڑک اُٹھے تھے ۔ ایک پولیس عہدیدار نے بتایاکہ آج 5:30 بجے صبح سے سکیورٹی فورسیس کی وقفہ وقفہ سے فائرنگ جاری رہی ۔ انھوں نے کہاکہ آج کی کارروائی میں کوئی ہلاکتیں نہیں ہوئی ہیں کیونکہ سکیورٹی فورسیس نے نئی حکمت عملی اختیار کی جسکے ذریعہ عسکریت پسندوں کو نہتا اور ان کے اسلحہ کے ذخائر کو ختم کرنا ہے ۔ عسکریت پسندوں کے ہفتہ کی دوپہر سی آر پی ایف قافلہ پر فائرنگ کے نتیجہ میں دو سی آر پی ایف جوان اور ایک عام شہری ہلاک اور 9 دیگر زخمی ہوئے تھے ۔ اس کے بعد عسکریت پسند جن کی حقیقی تعداد معلوم نہ ہوسکی ، ای ڈی آئی عمارت میں پناہ لے لی اور اس کے بعد سے تعطل جاری ہے۔ سکیورٹی فورسیس نے اس عمارت سے تقریباً 100 عام شہریوں بشمول اسٹاف اور ای ڈی آئی طلبہ کا بحفاظت تخلیہ کرادیا۔ کل جس وقت سکیورٹی فورسیس نے حملہ میں شدت پیدا کردی تب عسکریت پسندوں کی سخت مزاحمت کا سامنا کرنا پڑا اور وہ عمارت کے اندر اہم مقامات پر کنٹرول کئے ہوئے ہیں۔ فوج کی ایلیٹ پیرا فورس سے وابستہ دو کیپٹن رینک عہدیدار اور ایک لانس نائیک کل عسکریت پسندوں کو ختم کرنے کی کوشش میں ہلاک ہوگئے ۔ پون کمار فائرنگ کے تبادلہ میں ہلاک ہوئے جبکہ تشار مہاجن و لانس نائیک اوم پرکاش زخموں سے جانبر نہ ہوسکے ۔ جس وقت انکاؤنٹر جاری تھا ، پامپورہ ٹاؤن کے قرب و جوار میں رہنے والے ہزاروں افراد نے انکاؤنٹر کے مقام کی طرف بڑھنا شروع کردیا ۔ سکیورٹی فورسیس نے ان سے منتشر ہونے کی خواہش کی لیکن انھوں نے نعرہ بازی اور سنگباری شروع کردی ۔ پولیس نے انھیں منتشر کرنے آنسو گیس کا استعمال کیا۔ عہدیدار نے بتایا کہ جھڑپ میں تین افراد کو معمولی زخم آئے ۔

TOPPOPULARRECENT