Saturday , October 21 2017
Home / شہر کی خبریں / کشمیر کی بگڑتی ہوئی صورتحال پر شدید تشویش

کشمیر کی بگڑتی ہوئی صورتحال پر شدید تشویش

امیر حلقہ جناب حامد محمد خاں کا سخت ردعمل
حیدرآباد ۔ 7 ۔ اگست : ( راست ) : کشمیر کی بگڑتی ہوئی امن و ضبط کی صورتحال پر سخت تشویش کا اظہار کرتے ہوئے جناب حامد محمد خاں امیر حلقہ جماعت اسلامی ہند تلنگانہ و اڈیشہ نے اپنے صحافتی بیان میں کہا کہ نہتے عوام پر سیکوریٹی فورسز کی جانب سے طاقت کا بیجا استعمال اور پیلٹ گنوں کے ذریعہ فائرنگ نہ صرف کشمیری عوام میں مزید غم و غصہ و نفرت بلکہ امن وامان کا سنگین مسئلہ پیدا کررہی ہے ۔ جناب حامد محمد خاں نے کہا کہ کشمیر اور شمال مشرق ریاستوں کے لیے بنایا گیا خصوصی قانون (AFSPA) دراصل سیکوریٹی فورسز کو بے لگام اور غیر جوابدہ بنادینے کا باعث ہے ۔ جس پر فوری نظر ثانی کی ضرورت ہے ۔ امیر حلقہ نے کہا کہ کشمیر میں امن و امان میں اصل رکاوٹ فرضی مڈبھیڑ کے واقعات ، خواتین کی عصمت دری اور عام شہریوں پر بے جا مظالم کا سلسلہ ہے علاوہ ازیں کرفیو کا باربار نفاذ اور مواصلاتی رابطوں کی منسوخی بھی امن و آشتی میں رکاوٹ کا باعث ہے ۔ انہوں نے مزید کہا کہ سپریم کورٹ کا حالیہ فیصلہ فرضی مڈبھیڑ اور AFSPA قانون پر نظر ثانی کرنے کے لیے کافی ہے چنانچہ سپریم کورٹ کے فیصلہ کی روشنی میں سیکوریٹی فورسز اور انتظامیہ کو اپنا رویہ بدلنے کی شدید ضرورت ہے تاکہ حقوق انسانی کا تحفظ ہوسکے ۔ جناب حامد محمد خاں نے آخر میں یہ بات زور دے کر کہی کہ کشمیر کے مسئلہ کا حل صرف بات چیت کے ذریعہ ہی ہوسکتا ہے چنانچہ عوام کے اندر تو بے اطمینانی اور حکومت و انتظامیہ سے ناراضگی ہے اسے بحال کرنے کے لیے مذاکرات نہایت ضروری ہیں اور سیکوریٹی فورسز کی تعداد کو بتدریج کم کرنا بھی نہایت ضروری ہے انہوں نے مرکزی و ریاستی حکومتوں سے مطالبہ کیا کہ وہ فورا ان امور پر توجہ دے تاکہ امن و امان کے ماحول کو پروان چڑھایا جاسکے ۔۔

TOPPOPULARRECENT