Saturday , September 23 2017
Home / ہندوستان / کشمیر کے مسائل کے حل کیلئے قومی اقدام ضروری ، کل جماعتی اجلاس کا تاثر

کشمیر کے مسائل کے حل کیلئے قومی اقدام ضروری ، کل جماعتی اجلاس کا تاثر

چدمبرم کی تجویز ، قومی صیانت پر سمجھوتہ : وینکیا نائیڈو ، اقوام متحدہ ٹیم روانہ کرے : پاکستان

سرینگر ۔ /21 جولائی (سیاست ڈاٹ کام) وادی کشمیر کی صورتحال پر کل جماعتی اجلاس منعقد کیا گیا جس میں تاثر ظاہر کیا گیا کہ کشمیر کے مسائل کی یکسوئی کیلئے قومی اقدام ضروری ہے ۔ تمام دلچسپی رکھنے والی سیاسی پارٹیوں کو امن اور مفاہمت کی کارروائی کی پیشرفت میں حصہ لینا چاہئیے ۔ پانچ گھنٹہ طویل اجلاس میں نیشنل کانفرنس ، کانگریس ، بی جے پی ، پی ڈی پی ، سی پی آئی ایم ، سی پی آئی ، پینتھرس پارٹی ، ڈیموکریٹک فرنٹ ، ڈیموکریٹک نیشنلز پارٹی ، لوک جن شکتی ، عوامی اتحاد کے قائدین نے شرکت کی ۔ چیف منسٹر محبوبہ مفتی نے تمام سیاسی پارٹیوں کی شرکت پر ان سے اظہار تشکر کیا ۔ مختلف سیاسی پارٹیوں نے اس تاثر کا اظہار کیا کہ جموں و کشمیر کی صورتحال کو بہتر بنانے کیلئے تمام سیاسی پارٹیوں کو جنہیں اس مسئلہ سے دلچسپی ہے متحد ہوکر قومی سطح پر مسائل کے حل کیلئے اقدام کرنا چاہئیے ۔ نئی دہلی سے موصولہ اطلاع کے بموجب مرکزی وزیر اور سینئر بی جے پی قائد ایم وینکیا نائیڈو نے چدمبرم کی مسئلہ کشمیر کی یکسوئی کیلئے پیش کردہ تجویز پر برہمی ظاہر کرتے ہوئے کہا کہ یہ قومی صیانت پر سمجھوتے کے مترادف ہے ۔ انہوں نے کہا کہ کشمیر کے مسائل یو پی اے دور میں شروع ہوئے تھے ۔ ایک سابق وزیر داخلہ پی چدمبرم سے انہیں اس قسم کی تجویز کی توقع نہیں تھی ۔ آخر انہیں اس وقت ہوش کیوں نہیں آیا جبکہ یو پی اے مرکز میں برسراقتدار تھی ۔ دریں اثناء کانگریس پارٹی نے چدمبرم کی تجویز پر ردعمل ظاہر کرتے ہوئے کہا کہ یہ تجویز چدمبرم کی شخصی رائے ہے ۔

پارٹی کی ترجمانی نہیں ۔ اسلام آباد سے موصولہ اطلاع کے بموجب وزیراعظم پاکستان کے مشیر برائے خارجی امور سرتاج عزیز نے کہا کہ پاکستان میں اقوام متحدہ کی انسانی حقوق کمیٹی کو ایک مکتوب روانہ کرتے ہوئے درخواست کی ہے کہ ایک انکشاف حقائق ٹیم کشمیر روانہ کی جائے اور انسانی حقوق کی وادی کشمیر میں خلاف ورزیوں کی اطلاعات کی غیرجانبدارانہ تحقیقات کروائی جائیں تاکہ حقائق کا پتہ چل سکے ۔ دریں اثناء چیف منسٹر جموں و کشمیر محبوبہ مفتی نے کل جماعتی اجلاس کے بعد پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے وادی کشمیر میں احتجاج کے دوران فائرنگ سے انسانی جانوں کے ضائع ہونے پر اظہار رنج و غم کیا ۔ نیشنل کانفرنس کے کارگزار صدر عمر عبداللہ نے کہا کہ کل شام ان سے ملاقات کرکے چیف منسٹر نے کل جماعتی اجلاس میں شرکت کی درخواست کی تھی ۔ نیشنل کانفرنس جموں و کشمیر کی سب سے بڑی اپوزیشن پارٹی ہے ۔ اجلاس کے بعد اخباری نمائندوں سے بات چیت کرتے ہوئے سی پی آئی ایم قائد نے پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ سیاسی بے چینی دور کرنے کیلئے سیاسی ردعمل کا اظہار ضروری ہے ۔ وادی کشمیر میں حزب المجاہدین کے کمانڈر وانی کی انکاؤنٹر میں ہلاکت کے بعد احتجاج جاری ہے۔

Top Stories

TOPPOPULARRECENT