Thursday , June 29 2017
Home / ہندوستان / کشمیر کے موجودہ ماحول میں بات چیت ممکن نہیں:جیتیندر

کشمیر کے موجودہ ماحول میں بات چیت ممکن نہیں:جیتیندر

نئی دہلی8جون(سیاست ڈاٹ کام )وزیراعظم کے دفتر میں وزیرمملکت جیتیندر سنگھ نے جموں و کشمیر کے موجودہ حالات میں بات چیت کے امکان سے انکار کیا ہے اور کہا ہے کہ سنگباری اور بات چیت دونوں ساتھ ساتھ نہیں چل سکتیں۔ڈاکٹر سنگھ نے یواین آئی سے بات چیت میں کہاکہ جمہوریت میں بات چیت کا راستہ بند نہیں کیا جاسکتا لیکن اس کے لئے سازگار ماحول ہونا ضروری ہے ۔بات چیت کرنے کے لئے کچھ حد تک امن ہونا ضروری ہے اس لئے پتھراؤ اور بات چیت دونوں ساتھ ساتھ نہیں چل سکتے۔ریاست کی وزیراعلیٰ محبوبہ مفتی کی علیحدگی پسندوں اور پاکستان سے بات چیت کے مسلسل مطالبے کے سوال پر انہوں نے کہا کہ وزیراعلیٰ بھی واضح کرچکی ہیں کہ سنگباری اور گولیوں کے شورمیں بات چیت ممکن نہیں ہے ۔وادی میں بدامنی کے باوجود چیف منسٹر کا رویہ تعاون والا ہے ۔وہ یہ بھی کہہ چکی ہیں کہ کشمیر مسئلہ کا حل صرف وزیراعظم نریندر مودی ہی نکال سکتے ہیں۔کشمیر مسئلہ کو سلجھانے کی کوشش کے تحت بی جے پی لیڈر یشونت سنہا اور کانگریس کے لیڈر منی شنکر ایئر کی وادی کے لوگوں سے ہوئی بات چیت پر ڈاکٹر سنگھ نے کہا کہ ذاتی سطح پر امن کی کوشش کے لئے ہر شخص آزاد ہے۔

 

کشمیر میں ایک اورجنگجو کی لاش ملی
سرینگر8جون (سیاست ڈاٹ کام ) جموں و کشمیر میں لائن آف کنٹرول کے قریب ماچھل سیکٹر میں سیکورٹی فورسز کے ساتھ تصادم کے بعد تلاشی مہم میں ایک اور جنگجو کی لاش ملی۔ اس سیکٹر میں تصادم میں تین جنگجو مارے گئے تھے اور اس کے بعد سے تلاشی مہم جاری ہے۔ سرکاری ذرائع نے آج یہاں بتایا کہ سیکورٹی فورسز نے منگل دیر رات ضلع کپواڑہ میں ماچھل سیکٹر کے پاس پاکستان کے مقبوضہ کشمیر (پی او) کی جانب سے سرحد پار سے دراندازی کی کوشش کرنے والے جنگجو ؤں کو ہتھیار ڈالنے کیلئے کہا۔ اسی دوران جنگجوؤں نے خود کار ہتھیاروں سے فائرنگ شروع کردی۔ سکیورٹی فورسز نے بھی جوابی کارروائی میں گولیاں چلائی، اس طرح ایک جنگجو مارا گیا تھا۔ذرائع نے کہا کہ دیگر جنگجو اندھیرے کا فائدہ اٹھا کر فرار ہونے میں کامیاب رہے ۔ واقعہ کے بعد اضافی سیکورٹی فورسز کو ماچھل سیکٹر بھیجا گیا اور وہاں سرداری ناد کے جنگلوں میں مشترکہ تلاشی مہم چلائی گئی۔ اس مہم کے دوران تصادم میں دوجنگجو مارے گئے۔

Leave a Reply

TOPPOPULARRECENT