Tuesday , September 26 2017
Home / Top Stories / کلنٹن اور ٹرمپ میں سخت مقابلہ ‘ انتخابات آخری مرحلہ میں

کلنٹن اور ٹرمپ میں سخت مقابلہ ‘ انتخابات آخری مرحلہ میں

ٹرمپ کا روزآنہ پانچ جلسوں سے خطاب ‘ جان لیوا حملہ کی جھوٹی اطلاع پر ٹرمپ جلسہ گاہ سے منتقل
واشنگٹن ۔6نومبر ( سیاست ڈاٹ کام ) امریکہ کے  صدارتی انتخابات آخری مرحلہ میں داخل ہوگئے ہیں ۔ دونوں بڑی سیاسی پارٹیوں کے امیدواروں ہلاری کلنٹن اور ڈونالڈ ٹرمپ کو سخت مقابلہ کا سامنا ہے ۔ کلنٹن کی تائید میں 44 اور ٹرمپ کی تائید میں 43 فیصد رائے دہندے ہیں جس سے ظاہر ہوتا ہے کہ دونوں کے درمیان سخت انتخابی مقابلہ ہوگا ۔ جو لوگ ابھی تک فیصلہ نہیں کرسکے کہ کس امیدوار کی تائید کریں ۔ اُن کے ووٹوں پر کامیابی منحصر ہوگی ۔ ستمبر میں کلنٹن کو ٹرمپ پر 6فیصد کی برتری حاصل تھی ۔ فراخ دل پارٹی کے امیدوار گیری جانسن کو 6فیصد اور جل اسٹین کو جو گرین پارٹی کے امیدوار ہیں 4فیصد رائے دہندوں کی تائید حاصل ہے ۔ تین فیصد رائے دہندے ایک اور امیدوار کی تائید کرتے ہیں ۔ جب کہ دیگر دو فیصد نے ہنوز کوئی فیصلہ نہیں کیا ہے ۔ ہلاری کلنٹن اور ٹرمپ اپنے حامیوں کے ساتھ ریاستوں میں ایک کے بعد ایک سبقت حاصل کرتے رہے ہیں اس لئے قطعی طور پر مبصرین یہ کہنے سے قاصر ہیں کہ کونسا امیدوار ملک کا آئندہ صدر بنے گا ۔ ہلاری اوربل کلنٹن بارک اوباما اور مشل اوباما نے فلاڈلپیا میں ہلاری کے حامیوں کے جلوس میں شریک ہوئے ۔

صدر اوباما نے کہا کہ ڈونالڈ ٹرمپ کی زہرافشانی کی وجہ سے وہ اس عظیم ملک کی قیادت کرنے کے لئے نااہل ‘ نامناسب اور ناقابل قرار پاتے ہیں ۔ کلنٹن کی انتخابی مہم میں کہا گیا ہے کہ اوباما کی تائید سے ہلاری کلنٹن کی تائید میں چار فیصد ووٹوں کا اضافہ ہوگیا ہے ۔ تقریباً 20کروڑ رائے دہندے اپنا ووٹ استعمال کرنے کے اہل ہیں ۔ چار کروڑ سے زیادہ رائے دہندے 48 ریاستوں میں پہلے ہی اپنے ووٹ استعمال کرچکے ہیں ۔ انہیں پیشگی ووٹنگ کی سہولت سے استفادہ کرنے کا موقع حاصل تھا ۔ اعداد و شمار سے بلند حوصلہ ڈونالڈ ٹرمپ نے کئی نئے مقامات پر رکنے کا فیصلہ کیا جو ڈیموکریٹک پارٹی کے مستحکم گڑھ سمجھے جاتے ہیں۔ اوسطاً ٹرمپ روزآنہ پانچ جلسوں سے خطاب کررہے ہیں ۔ انہوں نے کہا کہ ہم کم از کم پانچ جلسے روزآنہ منعقد کررہے ہیں اور ہر جلسہ پُرہجوم ہے‘ جس سے اندازہ ہوتاہے کہ ملک کے آئندہ صدر ڈونالڈ ٹرمپ ہی ہوں گے ۔ انہوں نے دعویٰ کیا ہے کہ ہم بہتر مظاہرہ کررہے ہیں ۔ دریں اثناء شہر رینو میں سکریٹ سرویس کے ایجنٹوں نے ڈونالڈ ٹرمپ پر حملہ کے خطرہ کی اطلاع ملنے پر انہیں شہ نشین سے ہٹاکر نامعلوم مقام پر منتقل کردیا ۔ بعدازاں جلسہ کے مقام کی تفصیلی تلاشی لی گئی جس کے بعد یہ اطلاع جھوٹی ثابت ہوئی ۔

TOPPOPULARRECENT